بھارت کا یوم جمہوریہ، کشمیر میں آج مکمل ہڑتال ہو گی

بھارت کا یوم جمہوریہ، کشمیر میں آج مکمل ہڑتال ہو گی

  

سرینگر(کے پی آئی)متحدہ جہاد کونسل کے سربراہ سید صلاح الدین، کل جماعتی حریت کانفرنس، دختران ملت، مسلم خواتین مرکز،مسلم دینی محاذ کی کال پر آج بھارت کے یوم جمہوریہ کے موقع پر مکمل ہڑتال ہو گی۔مقبوضہ و آزاد کشمیر سمیت دنیا بھر میں کشمیری عوام بھارت کے یوم جمہوریہ کو یوم سیاہ کے طور پر منائیں گے۔ کل جماعتی حریت کانفرنس کے تمام دھڑوں نے 26جنوری کے موقعے پر جموں کشمیر میں ہمہ گیر احتجاجی ہڑتال اور اس دن کو یوم سیاہ کے طور پر منانے کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ سات دہائیوں سے جموں کشمیر کے عوام کے سیاسی ، اقتصادی حتی کہ مذہبی حقوق تک سلب کر کے دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے دعویداروں نے طاقت کے بل پر کشمیری عوام کا قافیہ حیات تنگ کر رکھا ہے ۔ بیان میں کہا گیا کہ کشمیر ی عوام کسی بھی ملک کے جمہوریت کا جشن منانے کے خلاف نہیں ہیں لیکن جس طرح گزشتہ سات دہائیوں سے جمہوریت کے نام پر یہاں کے عوام کے جملہ جمہوری اور انسانی حقوق سلب کرلئے گئے ہیں، ایسے میں یہاں کے عوام کو بھارت کی جانب سے اپنے اوپر ڈھائے جا رہے مظالم سے عالمی برادری کو باخبر کرنے کیلئے 26جنوری کے موقعے پر احتجاجی ہڑتال ہی ایک موثر ذریعہ ہے ۔متحدہ جہاد کونسل سربراہ سید صلاح الدین نے 26جنوری کو یوم سیاہ کے طور پرمنانے کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت کے جمہوری چہرے سے پوری طرح نقاب اتر گیا ہے۔جہاد کونسل ترجمان سید صداقت حسین کی طرف سے بیان کے مطابق صلاح الدین نے کہا کہ1947سے اب تک بھارتی فورسز نے5لاکھ سے زائد کشمیریوں کو اس جرم میں موت کے گھاٹ اتاردیا کہ وہ آزادی کا مطا لبہ کرتے ہیں،نہتے لوگ قتل کئے جارہے ہیں ،نوجوانوں کو گرفتار کیا جارہا ہے ،مسلمہ کشمیری قیادت کو جیلوں اور گھروں میں نظر بند کرکے رکھا گیا ہے،قلم اور زبان دونوں پر عملا پابندی ہے اورپوری ریاست کو ایک فوجی گیریژن میں تبدیل کیا گیا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کے اندر اقلیتیں با لکل غیر محفوظ ہوچکی ہیں،آئے روز عیسائی ،دلیت اور مسلمان بربریت کا نشانہ بنائے جارہے ہیں، ایسے میں یوم جمہوریہ منانا دنیا کی آنکھوں میں جھول دھونکنے کے مترادف اور عالم انسانیت کے ساتھ مذاق سے کم نہیں۔ صلاح الدین نے عوام سے اپیل کی کہ وہ اس روز ہمہ گیر ہڑتال کرکے عالمی برادری پر واضح کریں کہ وہ بھارت کے فوجی قبضے کے خلاف سراپا احتجاج ہیں۔ادھردختران ملت کی سربراہ آسیہ اندرابی نے 26 جنوری کو یوم سیاہ کے طور پر منانے کی اپیل کی۔ انہوں نے عوام سے مودبانہ اپیل کی کہ اس روز فقید المثال احتجاجی سماں پیدا کر کے بھارت کے یوم جمہوریہ سے لاتعلقی کا اظہار کریں جس نے پچھلی 7دہائیوں سے کشمیر پر قبضہ جما رکھا ہے ۔ آسیہ اندرابی نے کہاکہ ہندوستان بھر میں مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں کیلئے بھی یہ یوم سیاہ ہے کیونکہ ان کے جمہوری حقوق بھی اس ملک کی طرف سے سلب کئے گئے ہیں۔ انہوں نے ریاست کے مسلم والدین سے دینی حمیت و غیر ت کا مظاہرہ کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ ان تقریبات میں اپنے بچوں کو شامل نہ ہونے دیں اور نہ خود ہی ان تقریبات میں شرکت کریں۔ انہوں نے کہاکہ بھارت کے ہاتھ کشمیر میں پیر و جوان اور مرد و زن کے خون سے رنگے ہوئے ہیں اور ایسے میں اس ملک کا جمہوریت کا جشن دنیا کی نظروں میں دھول تو جھونک سکتا ہے لیکن ایک ایک کشمیری بھارت کے ظلم وجبر سے بخوبی واقف ہے۔مسلم خواتین مرکز کی سربراہ یاسمین راجہ نے26جنوری کو جموں وکشمیر کے لئے ایک سیاہ دن قراردیتے ہوئے کہا کہ جس ملک نے اپنی فوجی طاقت کے بل بوتے اور ظلم و جبر سے ایک پوری قوم کی آزادی کو چھین لی ہو، اسے جمہوریت کا نام لینا اور خود کو جمہوری ملک کہنا باعث حیرت ہے۔انہوں نے کہا کہ جمہوری ملک کہلانے کا حق اس ملک کو ہوتا ہے جو دوسروں کی عزت و آزادی اور حقوق کی قدر کرتا ہے۔

مزید :

عالمی منظر -