خودکشی کرنے والے نوجوان کی موت کی تفتیش نے نیا موڑ لے لیا

خودکشی کرنے والے نوجوان کی موت کی تفتیش نے نیا موڑ لے لیا
 خودکشی کرنے والے نوجوان کی موت کی تفتیش نے نیا موڑ لے لیا

  

لاہور(وقائع نگار)بادامی باغ کے علاقہ میں گھریلولڑائی جھگڑے سے دلبرداشتہ ہوکر مبینہ طور پر زہریلی گولیاں کھا کر اپنی زندگی کا خاتمہ کرنے والے نوجوان کی موت کی تفتیش نے نیا موڑ لے لیا ،پولیس نے قریبی رشتہ داروں اور عزیزوں کو شامل تفتیش کر لیا۔تفصیلات کے مطابق بادامی کے علاقے کھو کھر پنڈ کے 23سالہ خلیل نامی محنت کش کا گھر کے حالات اچھے نہ ہونے کی وجہ سے اکثر اپنی بیوی سے لڑائی جھگڑا رہتا تھا ، چند ماہ قبل بھی خلیل کا اپنی بیوی سے کسی گھریلوبات پر لڑائی جھگڑا ہوا جس سے دلبرداشتہ ہوکر اس نے زہریلی گولیاں کھا لیں جس کے بعد اس کی حالت غیر ہوگئی،اسے فوری طبی امداد کے لئے ہسپتال لے جایا گیا جہاں وہ جانبر نہ ہوسکا،متوفی ایک بچی کا باپ تھا۔پولیس کے مطابق ظاہری طور پر تو یہ خودکشی ہی لگتی ہے لیکن متوفی کے کچھ دوستوں کے مطابق اس کی اپنے چند رشتہ داروں کے ساتھ کسی معاملہ میں لڑائی تھی اور تلخ کلامی بھی ہوئی تھی ۔اس حوالے سے ان افراد کو شامل تفتیش کیا گیا ہے تاکہ کیس کی مکمل تفتیش کی جا سکے اور پتہ چل سکے کہ یہ خودکشی ہے یا قتل۔اس حوالے سے کچھ کہنا ابھی قبل از وقت ہو گا البتہ بہت جلد اصل حقائق سامنے آ جائیں گے۔

مزید :

علاقائی -