نوازشریف کا بطور وزیراعظم 7پاک فوج کے سربراہوں کیساتھ کام کرنے کا اعزاز

نوازشریف کا بطور وزیراعظم 7پاک فوج کے سربراہوں کیساتھ کام کرنے کا اعزاز

  

لاہور (نیوزڈیسک)نوازشریف وہ واحدشخصیت ہیں جو مختلف ادوار میں پاکستان کے تین باروزیراعظم منتخب ہو چکے ہیں اور انہوں نے اپنے دور حکومت میں 7چیف آف آرمی سٹاف کے ساتھ بطور وزیراعظم کام کیا۔تفصیلات کے مطابق نوازشریف نے جب نومبر 1990 میں حکومت سنبھالی تو اس وقت جنرل اسلم بیگ چیف آف آرمی سٹاف تھے جنہوں نے 17اگست 1988میں جنرل ضیاء الحق کے طیارہ حادثے میں انتقال کے بعدمنصب سنبھالا اور 1991میں ریٹائر ہوئے ان کے بعد آصف نواز جنجوعہ 16اگست 1991میں پاک فوج کے سربراہ بنے جو کہ 8جنوری 1993 دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کر گئے۔ ان کے بعد جنرل عبدالوحید کاکڑ12جنوری 1993کو آرمی چیف بنے ، ان کے آرمی چیف بننے کے چند ہی مہینوں بعد جولائی میں نوازشریف کی حکومت ختم ہو گئی۔جنرل جہانگیر کرامت نے جنوری 1996میں پاک فوج کے سربراہ کا منصب سنبھالا اور وزیراعظم نوازشریف نے بھی کچھ عرصہ کے بعد فروری 1997میں دوبارہ حکومت بنائی۔ جنرل جہانگیر کرامت نے نیشنل سیکیورٹی کونسل بنانے کا متنازع بیان دیا جس پر وزیراعظم نوازشریف نے اکتوبر 1998میں جنرل جہانگیر کرامت سے استعفیٰ لے لیا اور ان کے بعد جنرل پرویز مشرف کو چیف آف آرمی سٹاف تعینات کیا لیکن ایک بار پھر نوازشریف کی حکومت اپنی مدت پوری نہ کر سکی ، جنرل پرویز مشرف نے اکتوبر 1999 میں نوازشریف کی حکومت کا تختہ الٹ دیا۔ وزیراعظم نوازشریف 11مئی 2013کے عام انتخابات میں کامیا ب ہوئے اور تیسری بار پاکستان کے وزیراعظم بننے کا اعزاز حاصل کیا، جس وقت نوازشریف نے حکومت سنبھالی تو جنرل اشفاق پرویز کیانی چیف آف آرمی سٹاف تھے اور ان کے نومبر 2010میں ریٹائر ہونے کے بعد جنر ل راحیل شریف پاک فوج کے سربراہ منتخب ہوئے جوکہ رواں سال نومبر میں ریٹائر ہو رہے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -