پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں نے حکومت کیخلاف اتحاد قائم کر لیا

پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں نے حکومت کیخلاف اتحاد قائم کر لیا

  

لاہور(نمائندہ خصوصی )پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں نے حکومت کیخلاف اتحادقائم کر لیا۔ میاں محمودالرشید کی زیر صدارت ہونیوالے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ صحت ،تعلیم اور صاف پانی کیلئے مختص بجٹ اورنج ٹرین پر نہیں لگانے دینگے۔ اجلاس کے بعد مشترکہ اعلامیہ میں حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ ایوان کی منظوری کے بغیر جاری منصوبوں پر اسمبلی کو اعتماد میں لیا جائے، ہسپتالوں اور سرکاری سکولوں کی حالت بہتر بنائی جائے،پولیس کو سیاسی اثر سے پاک، افسران کی میرٹ پر تعیناتی، رروایتی تھانہ کلچر تبدیل اور اہلکاروں کی کمی کو پور کیا جائے۔ حکومت مخالف پہلے اجلاس میں جماعت اسلامی کے سید وسیم اختر ،پیپلز پارٹی کے خرم جہانگیروٹو،مونس الہی کے بیرون ملک ہونے کے باعث ق لیگ کے وقاص حسن موکل، خدیجہ عمر ،آزاد رکن اسمبلی احسن ریاض فتیانہ، ڈاکٹر مراد راس اور سعدیہ سہیل نے شرکت کی۔ اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر میاں محمودالرشید نے کہا کہ ہوئے کہا کہ حکومت ایوان کو اعتماد میں لئے بغیر، آرڈیننس کے ذریعے حکومتی معاملات چلا رہی ہے، اسمبلی کا اجلاس نہیں بلایا جاتا جو منتخب ایوان کی توہین کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے ایوان کی منظوری کے بغیر لاہور میں اورنج ٹرین کا منصوبہ شروع کیا،جس پرلاگت200ارب سے بڑھ گئی ہے انہوں نے کہا کہ حکومت اورنج ٹرین کے متعلق تحفظات دور کرے، چینی بینک سے کن شرائط پر قرضہ لیا گیا اسے منتخب ایوان کے سامنے رکھا جائے، تاریخی عمارتوں کا تحفظ یقینی بنایا جائے، منصوبے سے متاثرہ خاندانوں سے قبضہ لینے سے قبل ادائیگی کی جائی، شہریوں کے کم سے کم نقصان کیلئے روٹ کو تبدیل کیا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت دانستہ طور پر تعلیم، صحت اور صاف پانی کیلئے مختص فنڈز کو سرنڈر کرکے اورنج ٹرین جیسے منصوبوں پر خرچ کرنے جا رہی ہے، جبکہ حالت یہ ہے کہ میو ہسپتال میں ایم آر آئی مشین نہیں، ایک سی ٹی سکین سے کام چلایا جا رہا ہے، پنجاب کارڈیالوجی ہسپتال میں ویل چیئر پر اور ایک ایک بیڈ پر دو، دو مریضوں کو طبی امداد دی جا رہی ہے، چلڈرن ہسپتال لاہور میں وینٹی لیٹرز اور دیگر جان بچانے والے آلات نہیں، وزیر آباد کارڈیالوجی میں انجیو گرافی کی سہولت نہیں، ہسپتال میں ریڈیالوجسٹ ہے نہ پتھیالوجسٹ، صوبے بھر کے تمام سرکاری ہسپتالوں کی حالت قابل رحم ہے ایسے میں صحت کا بجٹ بڑھانے کی ضرورت ہے لیکن حکومت مختص بجٹ کو بھی سرنڈر کراکے غیر ضروری منصوبوں پر خرچ کی جا رہی ہے۔۔لاء اینڈ آرڈر پر بات کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر نے کہاپنجاب میں جرائم کی شرح خوفناک حد تک بڑھ چکی ہے جنوبی پنجاب سے متعلق ایک سوال کے جواب میں محمودالرشید نے جنوبی پنجاب میں ترقیاتی کام نہ ہونے کی مذمت کی ۔زراعت اور کسانوں کے سوال میں اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ حکومت پنجاب نے جہاں تعلیم، صحت کے شعبے سے زیادتی کی اس سے کہیں زیادہ کسانوں پر ظلم کیا بلکہ یوں کہا جائے کہ انکو زندہ درگور کر دیا ہر گز غلط نہ ہوگا۔

مزید :

صفحہ اول -