ہائیکورٹ نے اورنج ٹرین منصوبے کے لئے عثمان سنٹر میکلوڈ روڈ کی مسماری روک دی

ہائیکورٹ نے اورنج ٹرین منصوبے کے لئے عثمان سنٹر میکلوڈ روڈ کی مسماری روک دی

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے اورنج ٹرین منصوبے کے لئے عثمان سنٹر میکلوڈ روڈ کی مسماری روک دی، عدالت نے وینس سٹاپ ملتان روڈ پر بھی شہری کی دکان گرانے کے خلاف حکم امتناعی جاری کر دیا۔جسٹس عابد عزیز شیخ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے عثمان سنٹر میکلوڈ روڈ کے دکانداروں اعظم خان، محمد زاہد، محمد ساجد کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزاروں کے وکلاء نے موقف اختیار کیا کہ حکومت اور ایل ڈی اے اورنج ٹرین منصوبے کے لئے عثمان سنٹر کی مسماری کرنا چاہتی ہے،مارکیٹ ریٹ کے مطابق تینوں دکانوں کی قیمت 2 کروڑ 10لاکھ روپے بنتی ہے مگر حکومت دکانوں کے عوض معمولی معاوضہ دے رہی ہے جو بنیادی آئینی حقوق کی خلاف ورزی ہے، حکومت نے دکانوں سمیت عثمان سنٹر کی جگہ ایکوائرکرنے کے لئے متعلقہ قانون پر عملدرآمد نہیں کیا لہذا عثمان سنٹر کی مسماری روکنے کا حکم دیا جائے، وینس سٹاپ ملتان روڈ کے دکاندار فیصل منظور کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ایل ڈی اے کے افسران کوئی نوٹس اور معاوضہ دیئے بغیر ہی اس کی دکان مسمار کر چاہتے ہیں، دکان مسمار ہوئی تو اس کا سامان بھی ضائع ہو جائے گا، حکومت کا یہ اقدام دھونس کے زمرے میں آتا ہے لہذا درخواست گزار کی دکان کی مسماری روکنے کا حکم دیا جائے ، فاضل بنچ نے ایل ڈی اے کو اورنج ٹرین منصوبے کے لئے عثمان سنٹر میکلوڈ روڈ اور وینس سٹاپ ملتان روڈ پر شہری کی دکان مسمار کرنے سے روکتے ہوئے حکومت اور ایل ڈی اے سے 4 فروری تک جواب طلب کر لیاہے۔

مزید :

علاقائی -