رائل پام گالف اینڈ کنٹری کلب، امریکہ کلاسیکل ڈانسر فرح شیخ کی شاندار پرفارمنس

رائل پام گالف اینڈ کنٹری کلب، امریکہ کلاسیکل ڈانسر فرح شیخ کی شاندار ...

  

فنکار دنیا میں جہاں بھی رہے وہ اپنی صلاحیتوں سے ہر جگہ جانا اور پہچانا جاتا ہے امریکہ میں بسنے والی کلاسیکل ڈانسر فرح شیخ ایک انتہائی باصلاحیت فنکارہ ہیں ان کے رقص کی جتنی تعریف کی جائے وہ کم ہے گزشتہ دنوں فرح شیخ نے رائل پام گالف اینڈ کنٹری کلب میں پرفارم کیا جہاں انہوں نے کتھک ڈانس پیش کرتے ہوئے حاضرین سے بے پناہ داد وصول کی۔فرح شیخ نے دو گھنٹے تک مختلف آئٹمز پیش کئے،انہوں نے مغلیہ دور کے مشہور کرداروں سلیم اور انارکلی کی کہانی بھی کتھک ڈانس کے انداز میں پیش کی جسے بہت پسند کیا گیا اس کے علاوہ انہوں نے ’’مغل اعظم‘‘کے مشہور گانے ’’محبت کی جھوٹی کہانی پہ روئے‘‘ پر بھی شاندار پرفارمنس دی۔فرح شیخ کی زبردست پرفارمنس دیکھ کر مہمانوں نے ان کو خوب داد سے نوازا ان کو اپنے فن پر مکمل عبور حاصل ہے ۔ان کی پرفارمنس کی جتنی تعریف کی جائے وہ کم ہے ۔اس موقع پر مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی نمایاں شخصیات موجود تھیں جن میں وریام اقبال،پرویز قریشی،کامران لاشاری،خرم قریشی،نگہت چوہدری،وہاب خان،سوہائے آبڑو،سلمان راجہ،لیلیٰ لاشاری،مسعود اشعر اور فضا توفیق شامل ہیں۔رائل پام کے ڈائریکٹر وریام اقبال نے تقریب کا ہتمام ’’مشعل بکس‘‘ کے ساتھ مل کرکیا گیا جس کا بنیادی مقصدچیرٹی تھا۔فرح شیخ نے ’’پاکستان‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ انہوں نے سان فرانسسکو یونیورسٹی سے ڈانس کی تعلم حاصل کرتے ہوئے ڈگری لی جبکہ کتھک کی تعلیم پنڈت چتریش داس سے حاصل کی۔میں نے کلاسیکل رقص کی باقاعدہ تربیت حاصل کرنے کے بعد 2007میں پرفارم کرنا شروع کیا اور ہر آنے والے دن میں اپنی محنت اور لگن سے مسلسل کامیبی کی جانب گامزن ہوں مجھے یہ معلوم ہے کہ ابھی میری منزل دور ہے اور اس کو پانے کے لئے مجھے مزید لگن اور جنون کے ساتھ آگے بڑھنا ہوگا ۔میں پاکستان میں پہلی بار پرفارم کررہی ہوں اور مجھے یہاں آکر بہت اچھا لگا ہے کیونکہ یہاں اس فن کے بہت قدردان ہیں۔مجھے شو کے دوران جس طرح داد ملی ہے اس کو الفاظ میں بیان کرنا ممکن نہیں ہے ۔میں اپنے دورہ کے دوران لاہور کے تاریخی مقامات کی سیر کروں گی اس کے علاوہ بہت ساری شاپنگ کروں گی ۔اس ملک کے لوگ بہت ملنسار اور مہمان نواز ہیں مجھے جو پیار اور محبت پاکستان میں لی ہے وہ میری زندگی کی حسین یادوں کا حصّہ ہے میں اس کو کبھی فراموش نہیں کرپاؤں گی ۔ایک سوال کے جواب میں فرح شیخ نے بتایا کہ مجھے جب بھی بلایا جائے گا میں یہاں ضرور آؤں گی۔رائل پام کے ڈائریکٹر وریام اقبال نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ فرح شیخ کلاسیکل رقص کے حوالے سے پوری دنیا میں خاص شہرت اور مقام رکھتی ہیں وہ ہماری دعوت پر پاکستان تشریف لائیں جس کے لئے ہم دل کی گہرائیوں سے ان کا شکریہ ادا کرتے ہیں ان جیسے فنکار روز روز پیدا نہیں ہوتے ۔وریام اقبال نے مزید کہا کہ میں اس شاندار پروگرام کو آرگنائز کرنے میں معاونت پر ’’مشعل بکس‘‘کا بھی شکر گذار ہوں یہ ادارہ بین الاقوامی شہرہ آفاق مختلف زبانوں میں شائع ہونے والی کتب کا اردو میں ترجمہ کرنے میں خاص شہرت رکھتاہے۔ اس کے ساتھ ساتھ میں پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کا بھی شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں نے ہمیشہ ایسے پروگراموں کے لئے ہمارے ساتھ تعاون کیا ہم لوگ مستقبل میں بھی چیریٹی کے لئے اس قسم کے پروگراموں کا انعقاد کرتے رہیں گے ۔

مزید :

ایڈیشن 1 -