پنجاب یونیورسٹی کے اسسٹنٹ پروفیسر کی بازیابی کیلئے متعلقہ اداروں سے جواب طلب

پنجاب یونیورسٹی کے اسسٹنٹ پروفیسر کی بازیابی کیلئے متعلقہ اداروں سے جواب طلب

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائیکورٹ نے مبینہ طور پر داعش سے تعلق کے الزام میں گرفتار پنجاب یونیورسٹی کے اسسٹنٹ پروفیسر کی بازیابی کے لئے دائر درخواست پر وفاقی حکومت،وفاقی وزارت دفاع اور داعش کے معاملات کا جائزہ لینے کے لئے قائم جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم سے جواب طلب کر لیا۔جسٹس سردار شمیم نے کیس کی سماعت کی۔ اسسٹنٹ پروفیسر غالب عطا کی اہلیہ عاصمہ غالب نے عدالت کو بتایا کہ اس کے شوہر کو داعش سے تعلق کے شبے میں بغیر کسی قانونی جواز کے غیر قانونی حراست میں رکھا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کی پروفیسر غالب کی غیر قانونی تحویل سے ان کے اہل خانہ کو شدید ذہنی کوفت کا سامنا ہے ،پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے اہل خانہ کو پروفیسر کی حراست سے متعلق کچھ نہیں بتا رہے لہذا عدالت بازیابی کا حکم دے۔جس پر عدالت نے مبینہ طور پر داعش سے تعلق کے الزام میں گرفتار پنجاب یونیورسٹی کے اسسٹنٹ پروفیسر کی بازیابی کے لئے دائر درخواست پر وفاقی حکومت،وفاقی وزارت دفاع اور داعش کے معاملات کا جائزہ لینے کے لئے قائم جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم سے 15فروری کو جواب طلب کر لیاہے۔

مزید :

صفحہ آخر -