اورنج ٹرین منصوبے کو پاک چائنہ اقتصادی راہداری کا حصہ بنانے سے متعلق دستاویزات کو عدالتی کارروائی کا حصہ بنانے کی متفرق درخواست پر جواب طلب

اورنج ٹرین منصوبے کو پاک چائنہ اقتصادی راہداری کا حصہ بنانے سے متعلق ...

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے اورنج ٹرین منصوبے کو پاک چائنہ اقتصادی راہدری کا حصہ بنانے سے متعلق دستاویزات کو عدالتی کارروائی کا حصہ بنانے کی متفرق درخواست پر ایل ڈی اے اور پنجاب حکومت سے دوہفتوں میں جواب طلب کرلیاجبکہ مکمل منصوبے کو کالعدقرار دینے کی سول سوسائٹی کی درخواست پر عدالتی معاونین آج26جنوری سے دلائل شروع کریں گے ۔جسٹس عابد عزیز شیخ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے کامل ممتاز خان کی طرف سے دائر متفرق درکواست پر سماعت کی، درخواست گزار کی طرف سے اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ حکومت کے وکیل خواجہ حارث نے عدالت میں دلائل دیتے ہوئے اس بات کا انکشاف کیا تھا کہ اورنج ٹرین منصوبہ اقتصادی راہداری کا حصہ ہے،لہذا حکومت کو حکم دیا جائے کہ اورنج ٹرین منصوبے کو اقتصادی راہداری کا حصہ بنانے سے متعلق دستاویزات عدالت میں پیش کی جائیں، ابتدائی سماعت کے بعد عدالت نے حکومت اور ایل ڈی اے کو نوٹس جاری کرتے ہوئے دوہفتوں میں جواب طلب کر لیا، ٹرین منصوبے کو مکمل طور پر غیرقانونی قرار دینے سے متعلق کامل ممتاز خان سمیت سول سوسائٹی کیخلاف درخواست میں درخواست گزاروں کے وکلاء کے دلائل مکمل ہو گئے ہیں، وکلاء نے منصوبے کو ثقافتی ورثہ کی تباہی قرا ر دیتے ہوئے منصوبے پر کام فوری روکنے کا حکم دیا جائے، دو رکنی بنچ کی طرف سے مقررہ کردہ عدالتی معاونین سول سوسائٹی کی طرف سے اٹھائے گئے نکات پر 26جنوری کو دلائل شروع کریں گے ۔

مزید :

صفحہ آخر -