محکمہ تعلیم کا 5سالہ کنٹریکٹ کی بنیاد پر 2178اے ای اوز سمیت 32ہزار ایجوکیٹرز بھرتی کرنے کا فیصلہ

محکمہ تعلیم کا 5سالہ کنٹریکٹ کی بنیاد پر 2178اے ای اوز سمیت 32ہزار ایجوکیٹرز ...

  

لاہور)لیاقت کھرل( محکمہ تعلیم میں پانچ سالہ کنٹریکٹ کی بنیاد پر 2178 اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسرز)اے ای اوز( سمیت 32 ہزار ایجوکیٹرز بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔جس میں پنجاب کی تاریخ میں پہلی مرتبہ اے ای اوز کو ڈائریکٹ بھرتی کیا جا رہا ہے۔جس کی وزیراعلیٰ نے باقاعدہ منظوری دے دی ہے اور بھرتی کیلئے تعلیم کا معیار ایم ایڈ۔بی ایڈ اور این ٹی ایس کا ٹیسٹ پاس کرنا کی شرط کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔جس میں 15 فروری تک امیدواروں سے بذریعہ ڈاک این ٹی ایس کے دفاتر میں دخواستیں طلب کی گئی ہیں۔محکمہ تعلیم کے ذرائع کے مطابق وزیر اعلی پنجاب کے اس ویژن کے تحت کہ تعلیمی اداروں میں معیار تعلیم کو بہتر اور سکولوں انتظامی امور کو مزیدمضبوط بنایا جا رہا ہے اس کے تحت پنجاب بھر کے سکولوں میں ریکروٹمنٹ کے ذریعے ایجوکیٹرز بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس میں ایجوکیٹرز کو تعلیم میں بہتری جبکہ اے ای اوز کو انتظامی معا ملات کو احسن طریقے سے چلانے کے لئے ڈائریکٹ انتظامی آفیسرز اور گریڈ 16اور 17 میں بھرتی کیا جائے گا جبکہ ایجوکیٹرز گریڈ 9سے گریڈ 16 تک بھرتی ہو ں گے۔جس میں جنوبی پنجاب اور شمالی پنجاب کے اضلاع میں سب سے زیادہ اساتذہ اور انتظامی آفیسرز بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔اس میں خواہشمند اساتذہ اور انتظامی آفیسرز کو این ٹی ایس کا ٹیسٹ پاس کرنا ہو گا۔ نئی ریکروٹمنٹ پالیسی کے مطابق لاہور سمیت صوبہ بھر میں 2178اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسرز)اے ای اوز(سمیت 32 ہزار ایجوکیٹرز بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں پنجاب کی تاریخ میں پہلی مرتبہ اے ای اوز کو ڈائریکٹ بھرتی کیا جا رہا ہے۔جس میں گریڈ 9میں ای ایس ای ،گریڈ 14میں ایس ای ایس ای (SESE) اور گریڈ 16 میں سکینڈری سکولز ایجوکیٹرز )ایس ایس ای( بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔جس کے لئے تعلیم ماسٹر ڈگری کی شرط اور عمر میں پانچ سال کی رعایت جبکہ دوران سروس اپلائی کرنے والے اساتذہ کی عمر پر پابندی نہ رکھی گئی ہے۔اس میں لاہور میں 44اے ای اوز اور 940 ایجوکیٹرز بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ جنوبی پنجاب اور شمالی پنجاب کے اضلاع میں سب سے زیادہ انتظامی آفیسرزاور ایجوکیٹرز بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔اس میں بہاولنگر میں 1080جبکہ 105اے اوز بھرتی کئے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔جبکہ اٹک میں 1060ایجوکیٹرز بھرتی اور 53اے اوز بھرتی کئے جا رہے ہیں اسطرح گوجرانوالہ میں 609ایجوکیٹرز اور 62 اے ای اوز بھرتی کئے جا رہے ہیں۔ جبکہ راوالپنڈی میں 1060ایجوکیٹرز اور 50 اے ای اوز بھرتی کئے جا رہے ہیں۔جبکہ فیصل آباد ریجن میں سب سے زیادہ2327ایجوکیٹرز اور 98اے ای اوز بھرتی کئے جا رہے ہیں محکمہ تعلیم کے ذرائع کا کہنا ہے کہ تمام تر بھرتی پانچ سالہ کنٹریکٹ پر کئے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اور اساتذہ کی کارکردگی کاجائزہ لینے کے بعد ان کو مستقل کیا جائے گا۔ بھرتی کے خواہش مند امیدواروں کے لئے این ٹی ایس کا امتحان پاس کرنے کی شرط کو لازمی قرار دیا گیا ہے اور اس میں امیدواروں سے 15 فروری2016ء سے پہلے تک اپنی درخواستیں این ٹی ایس کے دفاتر کو بذریعہ ڈاک بھجوائیں گے۔ اس حوالے سے محکمہ تعلیم کے ایک اعلیٰ افسر کا کہنا ہے کہ لاہور سمیت پنجاب بھر کے سرکاری سکولوں میں انتظامی افسروں اور اساتذہ کی شدید کمی کا سامنا ہے۔ جس کے باعث خالی اسامیوں کو پر کرنے کے لئے انتظامی افسر اور اساتذہ بھرتی کئے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس میں انتظامی افسر پہلی دفعہ ڈائریکٹ بھرتی کئے جا رہے ہیں اس سے پہلے محکمہ تعلیم کے اساتذہ یا سینئر اساتذہ گریڈ 16 کے یا گریڈ 17 کے ٹیچر کو اے ای او تعینات کیا جاتا تھا۔ نئی پالیسی سے معیار تعلیم کی بہتری اور انتظامی امور احسن طریقے سے چلانے میں مدد ملے گی۔

مزید :

صفحہ آخر -