ٹوپی کے ناظمین اور کونسلروں کا حقوق کیلئے احتجاج کا اعلان

ٹوپی کے ناظمین اور کونسلروں کا حقوق کیلئے احتجاج کا اعلان

  

ٹوپی (نامہ نگار) ٹوپی بلدیاتی نمائیندوں کا اپنی حقوق کیلئے اختجاج کا اعلان ، حکومت منتخب نمائیندوں سے مزاق کر رہی ہے ، ہم پر بجٹ پاس کیا گیا مگر فنڈ کا اجراء ابھی تک نہیں کیا گیا ، پندرہ دن کے اندر اندر ہمیں دفاتر ، سیکرٹریز ، کلاس فور کے تعیناتی اور دیگر مالی اختیارات نہیں دئے گئے تو وزیر اعلیٰ ہاوس کے سامنے دھرنا دینے پر مجبور ہو جائیں گے اور مطالبات کے حل تک اختجاج جاری رکھیں گے اس حوالے سے یوسی غربی ٹوپی کے مختلف نیبر ہڈ کونسلوں کے نو منتخب ممبران جن میں ناظم عبدالحلیم قریشی ، جمیل حسہ زئی ، فرمان بہادر ، گل ، اور دیگر نے حکومت کی جانب سے ناظمین کو دفاتر سیکرٹریز تیس تیس لاکھ روپے کی بجٹ اعزازیہ اور دیگر اعلانات کو ٹوپی ڈرامہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ انتخابات ہوئے نو مہینے گزر گئی حکومت منتخب نمائیندوں کو فقط سر سبز باغات دکھانے پر ٹر خا رہی ہے ایک طرف حکومت میڈیا پر متواتر اختیارات نچلی سطح تک منتقل کر نے اور بلدیاتی نمنائیندوں کو با اختیار بنانے کی دعوے کر رہے ہیں جبکہ دوسری طرف عملاً گراونڈ پر کچھ نظر نہیں آرہی عوام حکومت کے اعلانات پر اعتماد کر تے ہوئے ہمیں جھوٹا قرار دے رہے ہیں اس لئیے وہ ہم سے ترقیاتی کاموں اور اپنی مسائل کے حل کیلئے ڈیمانڈز کر رہے ہیں ہم زمین اور آسمان کے درمیان معلق ہیں حکومت ہمارے اختیارات کے حوالے سے قوم کو مسلسل جھوٹ بول رہے ہیں ہم اس حالت سے تنگ آچکے ہیں لہذا ہمارے پاس اختجاج اور یا مستفی ہو نے کے سوا اور کوئی راستہ نہیں ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -