سراج الحق کا جامعۃ الرشیدیہ کا دورہ ، علماء کرام سے ملاقات

سراج الحق کا جامعۃ الرشیدیہ کا دورہ ، علماء کرام سے ملاقات

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے پیر کے روز جامعۃ الرشیدیہ کا دورہ کیا اور رئیس الجامعہ مولانا مفتی عبد الرشید ،مولانا مفتی عدنان کاکا خیل ،مولانا مفتی محمد اور دیگر علماء کرام سے ملاقات کی اس موقع پر جمعیت اتحاد العلماء کے مرکزی رہنما شیخ الحدیث مولانا عبد المالک ، جماعت اسلامی کے مرکزی نائب امراء راشد نسیم ،اسد اللہ بھٹو ،امیر کراچی حافظ نعیم الرحمن ،سکریٹری کراچی عبد الوہاب ، نائب امراء برجیس احمد ، اسامہ رضی ،جمعیت اتحاد العلماء کے مولانا عبد الوحید ،سکریٹری اطلاعات زاہد عسکری بھی موجود تھے۔جامعہ الرشید یہ کے دورے کے مو قع پر سراج الحق نے گفتگو کر تے ہوئے کہا کہ جامعۃ الرشید یہ دین کی بڑی خدمت کر رہی ہے جو قابل تحسین اور قابل فخر ہے ۔اس سے دینی قوتوں کو حوصلہ ملتا ہے ۔علماء کرام سے ملاقاتوں سے بھی ہمیں حوصلہ ملتا ہے ۔ آج ملک کو سیکولر ریاست بنانے کی کوشش کی جارہی ہے اس کا ہم سب کو مل کر مقابلہ کر نا ہو گا ۔پاکستان کا آئین اسلامی اور جمہوری ہے ۔انہوں نے بتا یا کہ سود کے حوالے سے آئین کی روشنی میں اور کرپشن کے خلاف ہم بڑی مہم کا آغاز کر نے جارہے ہیں ۔سود کے خاتمے سے پاکستان میں معاشی خوشحالی آئے گی ۔علماء کو اس سلسلے میں ہماری مدد کر نی چاہیئے ۔دین کے لیے جتنی بھی کو شش ہو رہی ہے ہم اس پر خراجِ تحسین پیش کر تے ہیں ۔علماء معاشر ے میں روشنی کے مینار ہیں۔سراج الحق نے کہا کہ عالم کفر اگر دنیا پر اپنا نظام مسلط کرنے کی کوشش کررہا ہے تو ہمارے علماء بھی اس کا توڑ کرنے کے لیے پوری کوشش کررہے ہیں ۔دینی ادارے ہمارے ادارے ہیں اس سے تقویت حاصل ہوتی ہے ۔علماء کا کام ہمارا سرمایہ وطاقت ہے ۔علماء کو مسلکی اختلافات سے بالاتر ہوکر کام کرنا چاہیے ۔مولانا مفتی عبد الرشید اور دیگر علماء کرام نے سراج الحق اور دیگر قائدین کا جامعۃ الرشید میں آمد پر شکریہ ادا کیا اور کہا کہ قاضی حسین احمد صاحب کا اتحاد امت کے لیے بڑا کردار رہا ہے ۔وہ کئی دفعہ مدرسہ تشریف لائے ۔دینی قوتوں کے درمیان خلیج اور دوریوں کو ختم ہونا چاہیے ۔سب کو ملک کر دین کی خدمت کرنی چاہیے ۔انہوں نے جامعہ کا مفصل تعارف بھی پیش کیا اور دارالافتاء اور دیگر شعبہ جات کا دورہ بھی کروایا ۔جماعت اسلامی کے رہنماؤں نے نماز ظہر جامعۃ الرشیدیہ میں ادا کی ۔اس موقع پر ظہرانے کابھی اہتمام کیا گیا تھا۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -