ہنگو کے شہری کو مالی معاوضہ ادا نہ کرنے پر شوکاز نوٹس

ہنگو کے شہری کو مالی معاوضہ ادا نہ کرنے پر شوکاز نوٹس

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کی جسٹس ارشاد قیصراورجسٹس مسرت ہلالی پرمشتمل دورکنی بنچ نے عدالتی احکامات کے باوجود ہنگو کے شہری کو مالی معاوضہ ادا نہ کرنے پر ڈی سی ہنگوکوشوکاذ نوٹس جاری کرتے ہوئے طلب کرلیاہے عدالت عالیہ کے فاضل بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز ہنگوسٹی کے رہائشی شوکت حسین کی جانب سے دائررٹ پرجاری کئے اس موقع پر درخواست گذار کے وکیل خالدتنویرروحیلہ نے عدالت کو بتایاکہ 2009ء میں فرقہ ورانہ فسادات کے دوران درخواست گذارکی ملکیتی مارکیٹ اورگھرآتشزدگی کے دوران جل کرخاکسترہوگئے تھے جس سے درخواست گذار کوکروڑوں کانقصان پہنچاتھااوراس ضمن میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے کئے جانے والے سروے کے دوران 39لاکھ 90ہزار روپے نقصان کاتخمینہ لگایاتھاتاہم درخواست گذار کانقصان زیادہ تھااس بناء اس نے پشاورہائی کورٹ میں درخواست دائرکی اورفاضل بنچ نے ضلعی انتظامیہ کو دوبارہ تخمینہ لگانے کاحکم دیاتھاجبکہ صوبائی حکومت نے مکمل طورپرگھرتباہ ہونے والے متاثرہ افراد کو فی گھرکے حساب سے تین لاکھ روپے اداکرنے کی پالیسی وضع کی تھی تاہم مذکورہ ادائیگی بھی نہیں کی گئی اس موقع پرایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل میاں ارشد جان نے عدالت کو بتایا کہ وفاق کی جانب سے کوئی فنڈجاری نہیں ہواہے اوریہ ذمہ داری بھی وفاق کی بنتی ہے کہ وہ ادائیگی کرے جبکہ درخواست گذارکے ملکیتی مکان میں بیت المال کادفترتھاجس کو فسادات کے دوران نقصان پہنچایاگیااورمذکورہ مکان کے نقصان کی بھی تلافی نہیں کی گئی ہے جس پرفاضل بنچ نے پہلی درخواست پرڈی سی ہنگوکوشوکاذ نوٹس جاری کردیا جبکہ دوسری درخواست پر چیئرمین بیت المال کونوٹس جاری کرتے ہوئے جواب مانگ لیا۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -