پریشانی کے عالم میں انسانی جس بائیں جانب جھک جاتا ہے :ماہرین

پریشانی کے عالم میں انسانی جس بائیں جانب جھک جاتا ہے :ماہرین
پریشانی کے عالم میں انسانی جس بائیں جانب جھک جاتا ہے :ماہرین

  

کراچی (این این پی) انسان جب کسی پریشانی میں مبتلا ہوتا ہے تو اس کا جسم بائیں جانب کو جھک جاتا ہے کیونکہ اس کے دماغ کا دائیاں حصہ زیادہ ایکٹو ہوتا ہے۔ برطانوی یونیورسٹی کے شعبہ سائیکالوجی کے ڈاکٹر ماریوو آئیک نے پہلی دفعہ اس بات کو دریافت کیا ہے۔ برطانوی سائنسی ریسرچ میں کہا گیا کہ اس ٹیسٹ کیلئے کچھ افرادکوپہلے ایک ٹارگٹ دکھایا گیا اور ان کی آنکھوں پر پٹی باندھ کر انھیں سیدھے چلتے ہوئے اس تک پہنچنے کا کہا گیا لیکن یہ تمام افراد اپنے ٹارگٹ تک جانے کے بجائے بائیں جانب چلنا شروع ہو گئے۔ ڈاکٹرو آئیک کا کہناہے کہ انسانوں کے دماغ کا دائیاں حصہ زیادہ ایکٹو ہوتاہے جس کی وجہ سے آنکھوں پر پٹی بندھے افراد نے پریشانی کے عالم میں غیر اراوی طورپر بائیں جانب چلنا شروع کر دیا حالانکہ انھیں اس سے قبل ٹارگٹ دکھایا گیا تھا ۔ ماہرین کی جانب سے کی گئی ایک اور تحقیق میں کہا گیا کہ ٹیسٹ کے دوران ان افراد کی کارکردگی بری طرح متاثر ہوتی ہے جنھیں معلوم ہوکہ ان کی نگرانی کی جارہی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -