این اے 122 دھاندلی کیس ، عبدالعلیم خان کا الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ جانے کا اعلان

این اے 122 دھاندلی کیس ، عبدالعلیم خان کا الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف ...
این اے 122 دھاندلی کیس ، عبدالعلیم خان کا الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ جانے کا اعلان

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پی ٹی آئی رہنما عبدالعلیم خان نے این اے 122 دھاندلی کیس میں الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ جانے کا اعلان کردیا ۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عبدالعلیم خان کا کہنا تھا کہ انتخابات شفاف نہ ہوں تو جمہوریت اور آمریت میں کوئی فرق نہیں رہتا الیکشن کمیشن کے پاس ہماری 2 درخواستیں ہیں اور این 122 کا کیس پہلے ہی چل رہا ہے ، الیکشن ٹربیونل کا تفصیلی فیصلہ سامنے نہیں آیا ، تفصیلی فیصلہ سامنے آنے کے بعد سپریم کورٹ جائیں گے۔

انہوں نے الزام عائد کیا کہ الیکشن ٹربیونل نے ہمیں سننے سے انکار کردیا، دھاندلی کے خلاف لڑیں گے اور ہر دروازہ کھٹکھٹائیں گے۔الیکشن سے متعلق کوئی بے ضابطگی دھاندلی ہی کہلائے گی اگر لوگوں نے مرضی سے ووٹ منتقل کیے تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں۔سردار ایاز صادق اگر بھاری مینڈیٹ سے جیتے ہیں تو خطرہ کس بات سے ہے؟دھاندلی نہ ہوتی تو 40 ہزار ووٹ سے جیت جاتا۔تمام ڈیٹا الیکشن کمیشن کی جانب سے دیا گیا تھا معلومات غلط ہیں تو ہمیں کیوں غلط معلومات دی گئیں۔

واضح رہے کہ پیر کے روز الیکشن ٹربیونل نے این 122 دھاندلی کیس کا مختصر فیصلہ سناتے ہوئے عبدالعلیم خان کی درخواست کو ناقابل سماعت قرار دیدیا تھا۔

مزید :

لاہور -اہم خبریں -