سپریم کورٹ نے این اے125میں ووٹوں کی تصدیق کا حکم دے دیا

سپریم کورٹ نے این اے125میں ووٹوں کی تصدیق کا حکم دے دیا
سپریم کورٹ نے این اے125میں ووٹوں کی تصدیق کا حکم دے دیا

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)سپریم کورٹ نے وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کے حلقے این اے 125میں نادرا کو ووٹوں کی تصدیق کا حکم دیتے ہوئے تین ماہ میں مکمل رپورٹ طلب کر لی ہے ۔

یہ حکم چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما حامد خان کی درخواست پر دیا۔نجی ٹی وی کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے رہنما حامد خان کی درخواست پر قومی اسمبلی کے حلقے این اے 125 میں ووٹوں کی تصدیق کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ انگوٹھوں کی تصدیق پر آنے والے اخراجات درخواست گزار حامد خان ادا کریں گے ۔جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ خواجہ سعد رفیق اسمبلی میں بیٹھے ہیں انہیں انگوٹھوں کی تصدیق سے کیا مسئلہ ہے ۔واضح رہے کہ 2013ءکے انتخابات میں مسلم لیگ ن کے خواجہ سعد رفیق نے اس حلقے سے ایک لاکھ 13ہزار416ووٹ لیکر پی ٹی آئی کے حامد خان کو شکست دی تھی ،حامد خان 83ہزار 190ووٹ لے سکے تھے ۔تحریک انصاف کے چیئرمین جن حلقوں میں دھاندلی اور دوبارہ انتخابات کا مطالبہ کرتے رہے اُن میں این اے125سر فہرست تھا ۔سپریم کورٹ کے حالیہ فیصلے کے بعد وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ اُنھیں معلوم نہیں تھا کہ عوام کے ووٹوں سے جیتنے کے بعد ڈھائی سال سے زیادہ عرصے تک عدالتوں کے چکر بھی لگانے پڑیں گے۔

مزید :

قومی -