یکم فروری سے ریلوے ہیڈکوارٹر کراچی منتقل کر رہا ہوں، شیخ رشید

یکم فروری سے ریلوے ہیڈکوارٹر کراچی منتقل کر رہا ہوں، شیخ رشید

کراچی(آئی این پی ) وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا ہے کہ یکم فروری سے ریلوے کا ہیڈ کوارٹر کراچی منتقل کر رہا ہوں، عمران خان کے دور میں ٹرینوں کو عوام کی امنگوں کے مطابق چلائیں گے، وزیر کی نوکری عارضی نوکری ہوتی ہے،کرپشن معاف نہیں کروں گا،پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت مزید دو ٹرینیں چلائی جائیں گی ۔کراچی میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ ہم 20 فریٹ ٹرینیں چلائیں گے، 30 مارچ کووی وی آئی پی مسافر ٹرین چلائیں گے، کراچی سے پشاور تک ٹریک تبدیل ہو گا،10 مارچ سے قبل ایک اور مال بردار ٹرین چلائیں گے، یکم سے 28فروری تک ٹرین میں ہوں گا، میں اپنا آفس فریٹ کے لیے راولپنڈی سے کراچی منتقل کررہا ہوں، اب جی ایم اور چیئرمین ریلوے کا دفتربھی یہاں ہوگا جب کہ یکم فروری سے ریلوے کا ہیڈ کوارٹر کراچی منتقل کر رہا ہوں۔ انہوں نے کہاکہ دبئی کے دوسرمایہ کار پاکستان ریلوے میں سرمایہ کاری کیلیے دلچسپی رکھتے ہیں۔شیخ رشید نے کہا کہ ایم ایل ون سے متعلق پیرکو وزیراعظم کی سربراہی میں اجلاس ہے، ایم ایل ون پرٹرینوں کی رفتار160 کلو میٹر فی گھنٹا ہوگی، ہم نے 4 ماہ میں 10 لاکھ لیٹر آئل بچایا ہے۔دریں اثناء گزشتہ روزوزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کراچی سے دوسری فریٹ ٹرین کا افتتاح کر دیا۔افتتاح کراچی کینٹ سٹیشن سے کیا گیا۔ فریٹ ٹرین 25 بوگیوں پر مشتمل ہے ، اس میں 1250 ٹن کارگو لے جانے کی صلاحیت ہے،مال گاڑی پبلک پرائیوٹ پارٹنر شپ کے تحت لاہور تک چلے گی ۔نئی کنٹینر فریٹ ٹرین کا آغاز نجی شعبے اور ریلوے کی مشترکہ شراکت داری سے کیا گیا ہے۔فریٹ ٹرین 25 بوگیوں پر مشتمل ہے جس میں 1250 ٹن کارگو لے جانے کی صلاحیت ہے اور ایک ٹرپ کے دوران مال گاڑی میں 50 کنٹینر کی ترسیل ہوگی۔مال گاڑی پبلک پرائیوٹ پارٹنر شپ کے تحت لاہور تک چلے گی جس کے چلنے سے ریلوے کی آمدنی میں اضافے کا امکان ہے۔

شیخ رشید

مزید : صفحہ آخر