قومی ہیلتھ کارڈ کے اجرا کا فروری سے شروع ہو گا : گورنر سندھ ،وفاقی وزیر صحت

قومی ہیلتھ کارڈ کے اجرا کا فروری سے شروع ہو گا : گورنر سندھ ،وفاقی وزیر صحت

کراچی(اسٹاف رپورٹر )گورنر سندھ عمران اسماعیل اور وفاقی وزیر صحت عامر کیانی نے اعلان کیا ہے کہ قومی ہیلتھ کارڈ کے اجراکا پروگرام آئندہ ماہ فروری میں شروع ہوگا، اس پروگرام سے 2کروڑافراد مستفید ہوں گے،ہاورڈ یونیورسٹی اور اقرا یونیورسٹی کے ساتھ مل کر گورنر ہاو س میں جلد آرٹیفیشل انٹیلی جنس سینٹر کا افتتاح کرینگے ،کراچی میں صحت کی سہولتیں بہتر بنانا چاہتے ہیں ، اسپتالوں کو مزید بہتر بنائیں گے ، جناح اسپتال ، قومی ادارہ برائے امراض قلب و صحت برائے اطفال وفاق کے زیر انتظام ہی تھے، اس میں اٹھارویں ترمیم کا کوئی مسئلہ نہیں ہے ، پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل کے تحت کوئی ترمیم کرانی پڑی تو تیار ہیں ،جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی کے طالبعلم پریشان نہ ہوں، ان کا مستقبل محفوظ ہے ،وزیر اعظم جلد کراچی کا دورہ کرینگے ۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے جمعہ کو گورنر گورنر ہاس کراچی میں مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان جلد کراچی کا دورہ کرینگے ، پہلے دورے میں بدین جائینگے اس کے بعد گھوٹکی تھرپارکر اور صوبے کے اضلاع کا بھی دورہ کرینگے، ہاورڈ یونیورسٹی اور اقرا یونیورسٹی کے ساتھ مل کر آرٹیفیشل انٹیلی جنس سینٹر بنایا ہے ،جلد اس کا افتتاح کرینگے ، اس سینٹر میں طلباکے لیے تدریسی عمل کا بھی اہتما م ہوگا،گورنر ہاو س کو عوام کے استعمال میں لانا چاہتا ہوں،جلد فٹنس ڈے کا بھی اعلان کرینگے ۔اس موقع پر وفاقی وزیر صحت عامر کیانی نے کہا کہ 2کروڑ افراد کو ہیلتھ کارڈ کے اجراکا پروگرام آئندہ ماہ فروری میں شروع کر رہے ہیں ، اس ضمن میں صوبائی وزیر صحت سے بھی بات ہوئی ہے اور انہیں بھی اس پروگرام میں شامل کرنے کے لئے دعوت دی ہے ، انھوں نے کہا کہ ہیلتھ پروگرام باقائدہ سسٹم کے تحت چلے گا،جب ہم حکومت میں نہیں تھے تب بھی صحت کے معاملے پر ہمیشہ بات کی ہے ، چاہتے ہیں کہ کراچی میں صحت کی سہولتیں بہتر ہوں ، عوام کے پیسے بچانے ہیں ان کو سہولیات فراہم کرنی ہیں اور ہم سرکاری اسپتالوں کو مزید بہتر بنائیں گے ۔انھوں نے کہا کہ جناح ہسپتال سمیت دو اداروں کو وفاق کہ حوالے کرنے پر مالی معاملات سمیت بچوں کے مسائل پرگفتگو ہوئی ہے ،لیکن یہ ادارے پہلے بھی وفاق کے ماتحت تھے اور اب ان کا انتظام واپس وفاق کے پاس چلا گیا ہے ،اس میں اٹھارویں ترمیم کا کوئی مسئلہ نہیں ہے ،ایک سوال پر انھوں نے کہا کہ جناح ہسپتال سے الحاق میڈیکل اسٹوڈنٹ کہ مسائل سے اگاہ ہیں،بچوں کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ، ہم ان کو200 فیصد یقین دلاتے ہیں کہ ان کو پریشانی کا سامنا نہیں ہوگا، طلبہ کے مستقبل کے حوالے سے حکمت عملی بنائینگے اور اگر پی ایم ڈی سی کے تحت کوئی ترامیم بھی کرنا پڑیں تو تیار ہیں ۔انھوں نے کہا کہ اسپتالوں میں فیڈرل گورنمنٹ بھرتیوں کے حوالے سے مسائل حل کرنے کے لئے کمیٹی بنائیں گے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر