حکومت شعائر اسلام کے خلاف کام کررہی ہے،لیاقت بلوچ

حکومت شعائر اسلام کے خلاف کام کررہی ہے،لیاقت بلوچ

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر )جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی جنرل سیکریٹری لیاقت بلوچ نے کہا کہ سانحہ ساہیوال سفاکیت کی انتہا ہے. پورے ملک میں قانون نافذ کرنے والوں کے یاتھوں ایسا ہوتا ہے،جے آئی ٹی پر کسی کو بھروسہ نہیں،بااختیار عدالتی کمیشن بننا چاہیے. سیکوریٹی اداروں نے دہشتگردی کے خلاف بڑی قربانیاں دی ہیں وزیراعظم سے مطالبہ کرتے ہیں قومی ایکشن پلان پر قومی قیادت نے روڈ میپ تیار کیا تھا اس کا جائزہ لیں،انتخابات کی دھاندلی کے خلاف جو کمیشن بنایا تھا کوئی پیش رفت نہیں ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے حیدرآباد پریس کلب میں میں کپتان کا اسلوب اقتدار بھی بیس لیس ہے،دس لاکھ مزید بیروزگار ہوگئے،پچاس ہزار گھرانوں کو بے گھر کردیا ہے روزگار سے محروم کردیاہے۔ایک سال کی مہلت ہے ورنہ حکومت کا کاؤنٹ ڈاؤن شروع ہوجائے گا۔سندھ میں فارورڈ بلاک کی باتیں کرنے والوںّ کو سمجھ لینا چاہیے کہ کسی ایک کا مینڈیٹ سلامت نہیں رہے گا،کشمیر میں.مظالم کی انتہاہے،کرتار پور راہداریکو کھولنے کی کوشش کی ہندوستان اسے سوچے سمجھے منصوبے کے تحت سکھوں کو دیوار سے لگارہا ہے،اس سے ہندوستان کے عزائم بے نقاب ہورہے۔حکومت قومی متقفہ پالیسی بنائی جائے،کشمیری عوام سیاظہاریکجہتی کے قومی 5 فروری کو سڑکوں پر نکلے۔سندھ حکومت سے عوام کو شکایات ہیں،بلاولاور مرادعلی شاہ کے لیے بڑے چیلنجز ہیں کرپشن کے دروازے بند نہ ہوئے تو لوگوں کو بھٹو اور بے نظیر کے نام پر دھوکہ نہیں دیا جاسکتا،حیدرآباد میں اسٹیٹ آف دی آرٹ یونی ورسٹی ہونا چاہیے،گورنمنٹ کالج کو یونی ورسٹی کا درجہ دے کر اچھا اقدام کیا جاسکتا ہے۔ریڑھی بانوں کو تنگ کیا جارہاہے..مسجد کو شہید کیا جارہا،عمران خان اپنے ساتھ دیگر پارٹیوں کو ملاسکتے ہیں تو اپوزیشن کو متحد ہونے کا حق ہے۔حکومت سود کے خاتمے اور عوام پر اعتماد کے لیے تیار نہیں،سو دن گزرگئے مزید سو دن گزرگئے مگر عوام کے لیے کچھ نہیں کیا،اہوزیشن حکومت کے خلاف کوئی تحریک نہیں چلارہی،بی نظیر,نواز,الطاف حسین اور اب عمران پاپولر لیڈر ہیں مگر وہ ڈلیور نہیں کرپاریے،جماعت اسلامی ہی ملک کو بحرانوں سے نکال سکتی ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر