ایل ڈی اے نے گریڈ17 کے ڈیپوٹیشن پر آئے افسرکو ڈائریکٹر ایڈمن کا چارج دے دیا

ایل ڈی اے نے گریڈ17 کے ڈیپوٹیشن پر آئے افسرکو ڈائریکٹر ایڈمن کا چارج دے دیا

لاہور( اپنے نمائندہ سے )ایل ڈی اے انتظامیہ نے ہائی کورٹ کے فیصلے کو ہوا میں اڑا دیاگریڈ 17 کے ڈیپوٹیشن پر آئے ہوئے افسر امیر حسن کو گریڈ 19 میں ڈائریکٹر ایڈمن کا چارج دے دیا, جبکہ چند دن پہلے عدالت عالیہ نے گریڈ 17 کے افسر شکیل بھٹی کی گریڈ 19 میں ڈائریکٹر ایڈمن پر تعیناتی پر حکم امتناعی دیتے ہوئے ایل ڈی اے انتظامیہ کو ایسے تمام افسران کی تفصیلات جمع کروانے کا حکم دیا تھا جو اپنے پے سکیل سے زیادہ میں کام کر رہے ہیں, دوسری طرف حالیہ تعینات ڈائریکٹر ایڈمن امیر حسن کی ڈیپوٹیشن کی معیاد یکم جولائی 2018 کو ختم ہو چکی ہے. ایل ڈی اے انتظامیہ کی طرف سے ایس اینڈ جی اے ڈی محکمے کو 2 جولائی کو لیٹر نمبر LDA/ADMN/S۔I/434کے ذریعے امیر حسن کی ڈیپوٹیشن کی معیاد بڑھانے کی درخواست کی جسے 6 اگست کو محکمہ ایس اینڈ جی اے ڈی نے مسترد کرتے ہوئے محکمہ ایل ڈی اے کو امیر حسن کی ڈیپوٹیشن کی معیاد بڑھانے کے لئے وزیراعلی پنجاب کو سمری بھیجنے کی ہدایت کی, لیکن اس کے باوجود ایل ڈی اے انتظامیہ نے دوبارہ 4 اکتوبر کو لیٹر نمبر LDA/ADMN/S۔I/607 کے ذریعے دوبارہ وہی درخواست بھیج دی جس کے جواب میں ایل ڈی اے انتظامیہ کو دوبارہ وزیراعلی کو سمری بھیجنے کی ہدایت کی گئی لیکن اب دوبارہ 6 دسمبر کو وہی درخواست ایس اینڈ جی اے ڈی محکمہ کو بھجوائی گئی جس کے جواب میں17 دسمبرکو محکمہ ایس اینڈ جی اے ڈی نے ایل ڈی اے انتظامیہ کو تمام معاملے کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا ہے کہ ایک طرف تو ایل ڈی اے انتظامیہ امیر حسن کی ڈیپوٹیشن کی معیاد بڑھانا چاہتے ہیں اور دوسری طرف وزیراعلی کو سمری بھیجنے سے کترا رہے ہیں. اسکے ساتھ یہ معاملہ بھی غور طلب ہے کہ ڈیپوٹیشن کے قانون کے مطابق عمومی طور پر افسر کی ڈیپوٹیشن کی معیاد تین سال ہے اور اس افسر کی مدت یکم جولائی 2018 سے ختم ہو چکی ہے. اسکے ساتھ ساتھ ایس اینڈ جی اے ڈی نے ایل ڈی اے کو کہا ہے کہ اگر اس افسر کی مزید ضرورت ہے تو وزیراعلی کو فوری سمری بھیجی جائے ورنہ امیر حسن کو ایل ڈی اے سے ریلیز کر دیا جائے. اس جواب کے باوجود ایل ڈی اے انتظامیہ نے تمام اصولوں اور قوانین کو بالائے طاق رکھ کر امیر حسن کو ڈائریکٹر ایڈمن کا چارج بھی دے دیا ہے. جس پر ایل ڈی اے ملازمین کے ساتھ ساتھ محکمہ ایس اینڈ جی اے ڈی کے افسران بھی شدید تحفظات کا شکار ہیں.

مزید : میٹروپولیٹن 1