دنیا کی کوئی طاقت ناموس رسالتؐ ایکٹ ختم نہیں کر سکتی،اکرم رضوی

دنیا کی کوئی طاقت ناموس رسالتؐ ایکٹ ختم نہیں کر سکتی،اکرم رضوی

  



لاہور(پ ر) انجمن طلبہ اسلام کے مرکزی سیکریڑی جنرل محمد اکرم رضوی نے کہا ہے کہ دنیا کی کو ئی طاقت قانونِ ناموسِ رسالت کو تبدیل یا ختم نہیں کرسکتی۔ عاشقان رسول اپنی جانوں پر کھیل کر 295-Cکا تحفظ کریں گے۔ انتہا پسندی دینی مدارس نہیں جدید تعلیمی اداروں میں پھیل رہی ہے۔ کامل ایمان کیلئے حضور نبی کریم کیساتھ لامحدود محبت اور غیر مشروط وفاداری ضروری ہے۔ سوشل میڈیا کے مثبت استعمال کیلئے نوجوان نسل کی تربیت ضروری ہوچکی ہے۔ مسلمان قر آن اور صاحب قر آن سے اپنا تعلق مضبوط بنائیں۔ قرآنی ہدایات و تعلیمات پر عمل ہی دنیا و آخرت میں کامیابی کی ضمانت ہے۔

اسلام میں شدت پسندی اور دہشتگردی کی کو ئی گنجائش نہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔اکرم رضوی نے کہا امریکہ نے اسلام اور مسلمانوں کو بد نام کرنے کیلئے جعلی جہادی تنظیمیں کھڑی کی ہیں۔ اسلام امن و محبت، رواداری او ر احترام انسانیت کا درس دیتا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا حج کو مہنگا کرنا اسلام دشمن فیصلہ ہے۔ حکومت حج اخراجات میں کمی کی سبیل نکالے۔ حاجیوں کو سبسڈی نہ دینے کا فیصلہ مایوس کن ہے۔ مدینہ کی ریاست کا مطلب عوام کو تکلیف نہیں ریلیف دینا ہے۔ ۔۔

قادیانی جہاں بھی جائیں ان کا دلائل سے مقابلہ کریں گے،علماء

لاہور(نمائندہ خصوصی) عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت لاہور کے مبلغ مولانا عبدالنعیم، پیررضوان نفیس، قاری جمیل الرحمن اختر، مولانا علیم الدین شاکرنے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عقیدہ ختم نبوت اور ناموس رسالت کا تحفظ ہرمسلمان کی ذمہ داری اورمذہبی فریضہ ہے تمام مسلمانوں کو اسلام اور عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کے لیے جذبہ صدیقی سے سرشار ہوکرمیدان عمل میں نکلنا ہوگا۔ عقیدہ ختم نبوت کا دفاع دراصل اسلام کا دفاع ہے،قادیانی جہاں بھی جائیں گے ان کا مقابلہ دلائل سے کیا جائے گا اسلام کا تحفظ اسی صورت میں ممکن ہے کہ اسکی بنیاد عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے اور منکرین ختم نبوت فتنہ قادیانیت کی ارتدادی سرگرمیوں کیخلاف آئینی و قانونی جدوجہد جاری رکھی جائے۔

اسلام پسند و محب وطن عناصر فتنہ قادیانیت کی اسلام و ملک دشمن سرگرمیوں کیخلاف متحد ہوجائیں اور قادیانیوں کی ناپاک سازشوں کاآئینی و قانونی مقابلہ کرنے کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں جو کہ تمام مسلمانوں کا دینی، ملی و قومی فرض ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1