اغواء، بداخلاقی، قتل کیس،مجرم کو سزائے موت، 5لاکھ جرمانہ ادا کرنیکا حکم

  اغواء، بداخلاقی، قتل کیس،مجرم کو سزائے موت، 5لاکھ جرمانہ ادا کرنیکا حکم

  



ملتان (خبر نگار خصوصی)ماڈل کورٹ ملتان کے جج اختر حسین کلیار نے رشتہ سے انکار پر 18 سالہ لڑکی کو کالج سے واپسی پر اغواء کرکے بداخلاقی کا نشانہ بنانے اور تیز دھار آلہ مار کر قتل کرنے والے سفاک شخص بشارت عرف باؤ کو تمام گواہوں اور ثبوتوں کی روشنی میں جرم ثابت ہونے پر موت اور 10 سال کی قید سمیت 5 لاکھ جرمانہ و معاوضہ کی سزا دینے کا حکم دیا ہے۔فاضل عدالت میں پولیس تھانہ ممتاز آباد میں (بقیہ نمبر12صفحہ12پر)

20 دسمبر 2017 کو درج ہونیوالی ایف آئی آر کے مطابق ملزم بشارت عرف باؤ نے طالبہ مریم بی بی کو رشتے سے انکار پر اغوا کیا، ملزم نے مقتولہ کو جنسی ہوس کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کردیا، ملزم نے خاتون کو تیز دھار آلہ مارکر قتل کیا اور سر میں سوراخ کردیا تھا، ملزم کے خلاف مقتولہ کے والد شیخ غلام مرتضی نے مقدمہ درج کرایا تھا، جس میں یہ بھی الزام عائد کیا گیا کہ ملزم نے اپنے جرم کا اعتراف بذریعہ فون اس وقت کیا جب مدعی اپنی مغوی بیٹی کو تلاش کررہا تھا،ملزم کو قتل کیس میں جرم ثابت ہونے پر موت اور زیادتی کی دفعہ کے تحت 10 سال قید سنائی گئی ہے جبکہ ملزم بشارت کو مجموعی طور پر 5 لاکھ روپے جرمانہ و معاوضہ بھی ادا کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

حکم

مزید : ملتان صفحہ آخر