ترقیاتی منصوبے، ملتان کیلئے پنجاب حکومت سے خصوصی فنڈز طلب کریں گے، شاہ محمود

ترقیاتی منصوبے، ملتان کیلئے پنجاب حکومت سے خصوصی فنڈز طلب کریں گے، شاہ ...

  

ملتا ن (سٹاف رپورٹر) وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمودقریشی نے کہا ہے کہ اولیاوں کے شہر ملتان کی اہمیت اور مرکزیت کے پیش نظر زیادہ ترقیاتی فنڈز کی ضرورت ہے، حکومت پنجاب سے ضلع ملتان کے لیے خصوصی فنڈز طلب کئے جائیں گے، تمام ایم این ایز اور ایم پی ایزفنڈز کے حصول کے لیے مشترکہ کوشش کریں گے، سیوریج شہر کا سب سے گھمبیر مسئلہ ہے، فنڈز کے حصول کے ساتھ ساتھ منصوبے بروقت مکمل کرنے کی بھی ضرورت ہے،وسائل کے صحیح استعمال میں افسران اپنا فعال کردارادا کریں۔انہو ں (بقیہ نمبر27صفحہ12پر)

نے ان خیالات کا اظہا راپنی زیرصدارت سرکٹ ہاوس میں ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے اجلاس سے خطا ب کر تے ہو ئے کیا۔اجلا س میں وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک، چیف وہپ قو می اسمبلی ملک عامر ڈوگر، معاون خصوصی جاوید اختر انصاری،ڈپٹی کمشنر عامر خٹک،ممبران صوبائی اسمبلی سلیم لابر، واصف راں،ظہیرالدین خان، طارق عبداللہ، چیئرمین پی ایچ اے اعجاز جنجوعہ، رانا جبار، عدنان ڈوگر،ضلعی انتظامیہ اور تمام محکموں کے سربراہان بھی موجود تھے۔ وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمودقریشی نے کہا کہ ضلع ملتان کے منتخب ممبران اسمبلی کے درمیان مثالی رابطہ کار موجود ہے،۔انہو ں نے کہا کہ ملتان شہر کی خوش قسمتی ہے کہ یہا ں فعال ڈپٹی کمشنر تعینات ہیں۔شہر میں صفائی کا مسئلہ ویسٹ سا لڈ مینجمنٹ کمپنی کو منظم بنانے سے حل کر لیا گیا ہے۔انہو ں نے کہا کہ ملتان کی تر قی کے لیے حکومت پنجاب کے ساتھ فنڈز کے حصول کا معاملہ کل اٹھایا جائے گا۔اجلاس میں وزیر خارجہ واسا کے افسران پر برہم ہو گئے اور انہو ں نے کہا کہ واسا کے افسران اپنا قبلہ درست کرلیں،سیوریج مسائل کی وجہ سے شہریوں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا ہے،واسا حکام شہریوں کو سیوریج کے عذاب سے نجات دلائیں، واسا کے حکام کواپنی کارکردگی کا جائزہ لینے کی ضرورت ہے۔وزیرخارجہ نے کہا کہ کتنے افسوس کی بات ہے کہ حکومت کی طرف سے ڈرینج کے لیے دیئے جانے والے 2 ارب روپے واسا کے ایک افسر نے استعداد نہ ہونے کی وجہ سے لینے سے انکار کر دیا،انہو ں نے کہا کہ واسا کو اپنی استعداد بڑھاناہو گی، شاہ محمود قریشی نے کہاکہ واسا کو فنڈز دلانے کے لیے ممبران اسمبلی اپنا کردار ادا کرنے کے لیے تیار ہیں، وزیر خارجہ نے کہا کہ تمام محکموں کے افسران کو ایک مثبت سوچ کے ساتھ آگے بڑھنا ہو گا، افسران منصوبوں کی بروقت تکمیل میں اپنی تمام صلاحیتوں کو بروئے کار لائیں، انہو ں نے کہا کہ حکومت سے غیر منظورشدہ 12 منصوبوں کی منظوری لی جائے گی اور ان منصوبوں کے لیے فنڈز بھی حاصل کئے جائیں گے، شاہ محمود قر یشی نے کہا کہ شہر کی بوسیدہ سیوریج لائنوں کے لیے سالانہ ترقیاتی پروگرام میں مختص تمام فنڈز حاصل کرنے کی کوشش کی جائے گی، انہو ں نے کہا کہ سیوریج کا پانی نہروں میں جانے سے فصلیں خراب اور زمینیں تباہ ہو رہی ہیں۔اس مقصد کے لیے واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ اور سلج کیرئیر کے منصوبے کی ضرورت ہے اس سلسلہ میں ایشین ترقیاتی بنک کی فنڈنگ زمین کی فراہمی سے مشروط ہے،شاہ محمود قریشی نے کہا کہ حکومت پنجاب سے زمین خریدنے کے لیے 10 ارب حاصل کئے جائیں گے، وزیر خارجہ نے کہا کہ کھاد فیکٹری سے وومن یونیورسٹی تک روڈ کی تعمیر کے لیے 35 کروڑ ڈیمانڈ کئے جائیں گے، حکومت پنجا ب سے نواز شریف یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے لیے فنڈنگ کا مسئلہ اٹھایا جائیگا، وزیرخارجہ نے کہاکہ نادر آباد فلائی اوور اور ملتان وہاڑی روڈ کو دوریہ کرنا ترجیحات میں شامل ہے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی مدنی چوک فلائی اوور کے منصوبے میں تاخیر پر بھی غصے میں آگئے اور کہا کہ فلائی اوور کا ٹینڈر جلد جاری کیا جائے، وزیر خارجہ نے کہا کہ عوام کا پیسہ عوام کی فلاح پر خرچ کرنے میں افسران کو کیا تکلیف ہے۔اس مو قع پر وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک نے نواں شہر سے ڈیرہ اڈا کے درمیان سڑک میں تاخیر کا نوٹس لیا اور کہا کہ ایم ڈی اے سڑک کی کارپیٹنگ کا کام جلد شروع کرے۔ چیف وہپ عامر ڈوگر نے کہا کہ منتخب نمائندوں کی طرف سے تجویز کئے گئے منصوبوں پر ہوم ورک کیا گیا ہے،منصوبے عوام کی رائے سے تجویز کئے گئے ہیں، کسی افسر کو منصوبوں میں روڑے اٹکانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ ڈپٹی کمشنر عامرخٹک نے کہا کہ ضلع کے جن ترقیاتی منصو بو ں کے لیے فنڈز جاری کئے گئے ہیں وہ 53 فیصد خرچ کر لیے گئے ہیں، 30 جون تک تمام فنڈز کے استعمال کو یقینی بنایا جائے گا،ضلع ملتان میں ترقیاتی منصوبوں کے لیے مزید فنڈنگ کی ضرورت ہے۔اجلاس میں بر یفنگ د یتے ہو ئے بتا یا گیا کہ سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت 218 منصوبوں کے لیے 7 ارب 80 کروڑ روپے مختص کئے گئے ہیں، سالانہ ترقیاتی پروگرام کے لیے 2 ارب روپے فنڈز جاری کئے گئے جن میں سے 1 ارب 53 کروڑ روپے خرچ کئے گئے ہیں، کمیونٹی ڈویلپمنٹ پروگرام کے تحت 137 سکیموں لیے ایک ارب مختص کئے گئے ہیں،سوشل ایکشن پروگرام کے تحت 329 منصوبوں کے 90 کروڑ روپے،منزلیں آسان پروگرام کی 5 سڑکوں کے لیے 29 کروڑ اور میونسپل سروسز پروگرام کے 177 منصوبوں کے لیے 67 کروڑ روپے مختص کیے گئے ہیں۔

شاہ محمود

مزید :

ملتان صفحہ آخر -