مقبوضہ کشمیر کے سابق کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ کی 5 اگست سے پہلے اور اب کی تازہ تصویر، مودی سرکار بری طرح بے نقاب

مقبوضہ کشمیر کے سابق کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ کی 5 اگست سے پہلے اور اب کی تازہ ...
مقبوضہ کشمیر کے سابق کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ کی 5 اگست سے پہلے اور اب کی تازہ تصویر، مودی سرکار بری طرح بے نقاب

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نئی دہلی(ڈیلی پاکستان آن لائن)مقبوضہ کشمیر میں گذشتہ 6 ماہ سے کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم نے مودی سرکار کے نظریہ امن کے جھوٹے پرچار کو پوری طرح آشکار کر دیا ہےجبکہ گذشتہ 6 ماہ سے بھارتی حکومت کی قید میں رہنے والے مقبوضہ کشمیر کے سابق بھارت نواز کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ کی دوران حراست  تصویر نے تو مودی سرکار کے ظلم و بربریت اور مقبوضہ وادی کی اصل صورت حال پوری دنیا کے سامنے بے نقاب کر دی ہے۔

بھارتی نجی ٹی وی’’انڈیا ٹو ڈے‘‘ کی رپورٹ کے مطابق مقبوضہ جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ عمر عبد اللہ جو گذشتہ سال اگست سے جیل میں اسیری کی زندگی گذاررہےہیں کی جیل سےوائرل ہونےوالی حالیہ تصویر نے سب کو ہی حیران اور پریشان کر دیا ہے۔سابق کٹھ پتلی وزیراعلیٰ فاروق عبد اللہ کےخوبرو اور ’’گورے‘‘ سمجھے جانے والے کلین شیو صاحبزادے عمر عبداللہ  کی 6 ماہ کی جیل یاترا نے حالت ہی بدل دی ہے ،’’گورے چٹے عمر عبداللہ کی جیل سے وائرل ہونے والی تصویر میں وہ سفید اور کالی داڑھی میں انتہائی ضعیف دکھائی دے رہے ہیں ،عمر عبداللہ نے مودی حکومت کی جانب سے مقبوضہ وادی کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے اقدام کی کھل کر مخالفت کی تھی جس پر مودی سرکار نے دیگر کشمیری حریت پسندوں کے ساتھ عمر عبد اللہ کو بھی حراست میں لیتے ہوئے جیل میں قید کر دیا تھا اور تاحال وہ جیل میں ہی قید ہیں۔عمر عبد اللہ جنہیں کشمیری حریت پسند ہمیشہ بھارت نواز کہتے تھے ،ان کی جیل میں حالت دیکھ کر اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ بھارتی جیلوں میں قید حریت پسند قیادت اور کشمیری نوجوانوں کے ساتھ مودی سرکار کس طرح کا سلوک روا رکھ رہی ہو گی؟۔

مزید :

انسانی حقوق -