بلوچستان کے سابق وزیراعلیٰ یہ اپنے کس سب سے بڑے دشمن کی بیگم کے سر پر ہاتھ رکھ رہے ہیں؟ جان کر ہر پاکستانی کو فخر ہوگا

بلوچستان کے سابق وزیراعلیٰ یہ اپنے کس سب سے بڑے دشمن کی بیگم کے سر پر ہاتھ رکھ ...
بلوچستان کے سابق وزیراعلیٰ یہ اپنے کس سب سے بڑے دشمن کی بیگم کے سر پر ہاتھ رکھ رہے ہیں؟ جان کر ہر پاکستانی کو فخر ہوگا

  



کوئٹہ(مانیٹرنگ ڈیسک) نواب ثناءاللہ خان زہری مسلم لیگ ن کے رہنماءہیں اور گزشتہ دور حکومت میں 24دسمبر 2015ءسے 9جنوری 2018ءتک بلوچستان کے وزیراعلیٰ رہے۔ ان دنوں ان کی ایک تصویر سوشل میڈیا پر گردش کر رہی ہے جس میں وہ ایک خاتون کے سر پر ہاتھ سے پیار دے رہے ہوتے ہیں۔ اس تصویر کا پس منظر ایسا ہے کہ سن کر ہر پاکستانی میر ثناءاللہ زہری کی عظمت کا قائل ہو جائے گا۔ اس تصویر میں موجود خواتین اس دہشت گرد کمانڈر کی فیملی سے ہیں جس نے حملہ کرکے میر ثناءاللہ زہری کے بھائی اور بیٹے کو شہید کر دیا تھا۔

یہ خواتین معافی کے لیے میر ثناءاللہ زہری کے پاس آئیں اور میر ثناءاللہ زہری نے عظیم بلوچ روایات کی پاسداری کرتے ہوئے خواتین کو چادریں اوڑھائیں اور ان کے سر پر ہاتھ رکھ کر انہیں عزت دی اور امن کی ایسی جوت جگائی جس کی لو سے آج بلوچستان منور ہو رہا ہے۔ یہ تصویر ابتدائی طور پر بحث و مباحثے کی ویب سائٹ Redditپر ارباب بلوچ زہری نے پوسٹ کی ہے۔ اس کے نیچے کمنٹس میں صارفین میر ثناءاللہ زہری کے اس حوصلے کو خراج تحسین پیش کر رہے ہیں۔

ایک صارف نے لکھا کہ ”ایسی چیزوں کی وجہ سے ہمیں اپنے پاکستانی ہونے پر فخر ہوتا ہے۔ ہم کبھی اخلاقی پستی میں نہیں گرتے۔ اکبر بگٹی کو یاد کریں جنہوں نے اپنے بیٹوں کی ہلاکت پر بگٹی قبیلے کی تین ذیلی شاخوں کے لوگوں کو علاقہ بدر کرکے ڈیرہ بگٹی سے نکال دیا تھا اور ایک طویل لڑائی کی بنیاد رکھ دی تھی۔ میں خوش ہوں کہ ثناءاللہ زہری نے بدامنی پھیلانے کی بجائے امن کو موقع دیا۔ زہری نے اپنی آنکھوں کے سامنے اپنے بیٹے کو مرتے دیکھا لیکن انتقام لینے کی کوشش نہیں کی۔ یہ ان کے عظیم انسان ہونے کا ثبوت ہے۔ میں ان کی سیاست کو پسند نہیں کرتا لیکن بطور انسان ان کی دل سے عزت کرتا ہوں۔“

مزید : علاقائی /بلوچستان /کوئٹہ