لڑکی کی لاش ہسپتال چھوڑنے کا معاملہ، پولیس نے اسقاط حمل کرنیوالی خاتون اور دوسرے ملزم کو بھی گرفتار کرلیا

لڑکی کی لاش ہسپتال چھوڑنے کا معاملہ، پولیس نے اسقاط حمل کرنیوالی خاتون اور ...
لڑکی کی لاش ہسپتال چھوڑنے کا معاملہ، پولیس نے اسقاط حمل کرنیوالی خاتون اور دوسرے ملزم کو بھی گرفتار کرلیا

  

لاہور (ویب ڈیسک) نجی یونیورسٹی کے ٹیچنگ ہسپتال میں لڑکی چھوڑنے کے کیس میں پولیس نے دوسرے ملزم کو بھی گرفتار کرلیا، پولیس کے مطابق دوسرے نوجوان کی شناخت اویس کے نام سے ہوئی ہے جبکہ اسقاط حمل کرنیوالی خاتون بھی قانون کی گرفتار میں آچکی ہے۔

 پولیس کے مطابق لڑکی کا اسقاط حمل کسی دوسرے ضلع سے کرایا گیا، گرفتار کئے گئے دونوں ملزمان کے بیانات لئے جا رہے ہیں، خاتون کیساتھ ایک مرد کو بھی پکڑا گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اویس لڑکی کو ہسپتال لانے والی گاڑی میں موجود رہا، لاش ہسپتال میں لانے والے ملزم اسامہ منیر کو پہلے ہی گرفتار کیا جا چکا ہے۔

یادرہے کہ ملزم اسامہ نے  لڑکی "م "   کو اٹھا کر گاڑی سے باہر نکالا،ملزم لاش ہسپتال کی ایمرجنسی میں رکھ کر فرار ہو جاتا ہے۔ پولیس نے ملزم اسامہ سے تحقیقات شروع کر دی ہیں۔پولیس کے مطابق گجرات کی رہائشی 20 سالہ  لڑکی گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور سے اپنی ڈگری لینے آئی تھی جہاں سے وہ رائیونڈ روڈ پر واقع نجی میڈیکل یونیورسٹی چلی گئی، پولیس نے ہسپتال عملے کے بیانات قلمبند کر لیے ہیں۔ 

گرفتار اسامہ نے پولیس کو بتایا کہ وہ اور مرحومہ  آپس میں دوست تھے، وہ حاملہ تھی، اسقا ط حمل کے دوران زیادہ خون بہہ جانے سے اس کی موت ہوگئی اور دونوں کا تعلق گجرات سے ہے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -