صحت کارڈ پر پرائیویٹ ہسپتال میں بھی علاج ممکن، نجی ہسپتالوں کو سستی زمینیں بھی دے رہے ہیں: عمران خان

صحت کارڈ پر پرائیویٹ ہسپتال میں بھی علاج ممکن، نجی ہسپتالوں کو سستی زمینیں ...
صحت کارڈ پر پرائیویٹ ہسپتال میں بھی علاج ممکن، نجی ہسپتالوں کو سستی زمینیں بھی دے رہے ہیں: عمران خان
سورس: Screengrab

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ہماری حکومت ہیلتھ سسٹم میں جو کرنے جارہی ہے وہ نظام شاید ہی دنیا میں کہیں اور ہو، مجھے برطانیہ کے صحت کے نظام نے متاثر کیا، برطانیہ کا ہیلتھ سسٹم دنیا میں سب سے اچھا سسٹم ہے لیکن جو ہم کرنے جا رہے ہیں ایسا پروگرام دنیا میں شاید ہی کہیں ہو، پرائیویٹ ہسپتالوں کو سستی زمینیں بھی دے رہے ہیں۔

اسلام آباد میں صحت کارڈ کے اجرا کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں نے صحت کارڈ کا بہت بڑا اقدام اٹھایا ہے، ہر خاندان کے پاس 10 لاکھ روپے کا ہیلتھ کارڈ ہو گا، صحت کارڈ پر سرکاری ہسپتال کے علاوہ پرائیویٹ ہسپتال میں بھی علاج کرایا جا سکتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ  پاکستان میں سسٹم صرف اشرافیہ کے لیے بن گیا تھا لیکن صحت کارڈ کے ذریعے کوئی بھی شخص نجی ہسپتالوں میں علاج کرا سکتا ہے، ماضی کے حکمرانوں کو کھانسی بھی ہوتی تھی تو علاج کے لیے بیرون ملک چلے جاتے تھے جبکہ میانوالی جیسے پسماندہ علاقوں سے لوگوں کو  سرکاری ہسپتالوں میں علاج کے لیے راولپنڈی جانا پڑتا تھا،  جتنی مہم عثمان بزدارکے خلاف چلی اتنی کسی وزیراعلیٰ کے خلاف نہیں چلی، سروے آیا تو عثمان بزدار سب سے زیادہ کامیاب وزیراعلیٰ بن گئے۔

وزیراعظم نے کہا کہ نیشنل سکیورٹی عوام دیتی ہے، جب عوام ملک کو اپنا مانتی ہے تب قوم کھڑی ہوتی ہے، ساڑھے 400 ارب روپے ہیلتھ کارڈ پر خرچ کیے جا رہے ہیں، 5 مدر اینڈ چائلڈ اسپتال بنا رہے ہیں، ہم دنیا کے لیے ایک مثال بنیں گے کہ فلاحی ریاست کیا ہوتی ہے، پرائیویٹ اسپتالوں کو سہولتیں دے رہے ہیں، سستی زمینیں بھی مہیا کر رہے ہیں۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -