ایلون مسک کی خلائی تحقیقاتی کمپنی کے ایک راکٹ کا واپس زمین کی طرف سفر کے دوران ایندھن ختم، چاند پر ہی گر کر تباہ ہونے کا امکان

ایلون مسک کی خلائی تحقیقاتی کمپنی کے ایک راکٹ کا واپس زمین کی طرف سفر کے ...
ایلون مسک کی خلائی تحقیقاتی کمپنی کے ایک راکٹ کا واپس زمین کی طرف سفر کے دوران ایندھن ختم، چاند پر ہی گر کر تباہ ہونے کا امکان
سورس: Instagram/elonmusk

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا کے امیر ترین شخص ایلون مسک کی خلائی تحقیقاتی کمپنی ’سپیس ایکس‘ کا ایک راکٹ ایندھن ختم ہو جانے کے سبب چاند پر گر کر تباہ ہونے جا رہا ہے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق سپیس ایکس نے یہ راکٹ خلاءمیں بھیج رکھا تھا جہاں یہ تحقیقی مقاصد کے لیے ڈیٹا اکٹھا کر رہا تھا۔ اب اس راکٹ نے واپس زمین کا سفر شروع کر دیا تھا تاہم اس میں اب اتنا ایندھن باقی نہیں بچا کہ یہ واپس زمین پر آ سکے، لہٰذا یہ مارچ میں چاند پر گر کر تباہ ہو جائے گا۔

رپورٹ کے مطابق اس راکٹ کا نام ’فالکن 9‘ ہے جو فروری 2015ءمیں خلاءمیں بھیجا گیا تھا۔ اسے زمین پر آ کر سمندر میں تیرتے کسی پلیٹ فارم پر اترنا تھا تاہم ایندھن کی کمی کی وجہ سے اب یہ زمین پر نہیں آ سکے گا۔ سائنسدانوں کی طرف سے اس راکٹ کے چاند کی سطح پر گر کر تباہ ہونے کی حتمی تاریخ 4مارچ بتائی گئی ہے۔ یہ محض 2میل فی گھنٹہ کی رفتار سے چاند کی سطح سے ٹکرائے گا۔راکٹ میں لگے کیمروں سے اس کے چاند کی سطح سے ٹکرانے کی ویڈیو بھی حاصل کی جائے گی۔ 

مزید :

بین الاقوامی -سائنس اور ٹیکنالوجی -