معروف ٹیکنالوجی کمپنی ایپل نے اپنے سی ای او کو ہراساں کرنے والی خاتون کے خلاف اہم قدم اُٹھا لیا

معروف ٹیکنالوجی کمپنی ایپل نے اپنے سی ای او کو ہراساں کرنے والی خاتون کے خلاف ...
معروف ٹیکنالوجی کمپنی ایپل نے اپنے سی ای او کو ہراساں کرنے والی خاتون کے خلاف اہم قدم اُٹھا لیا
سورس: Twitter/@tim_cook

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی ٹیکنالوجی کمپنی ’ایپل‘ نے اپنے چیف ایگزیکٹو آفیسر ٹم کک کو ہراساں کرنے والی خاتون کے خلاف عدالت سے رجوع کر لیا۔ فوکس نیوز کے مطابق اس خاتون کی شناخت جولیا لی شوئی کے نام سے ہوئی ہے۔ ٹم کک پہلی بار 2020ءمیں اس خاتون سے شناسا ہوئے۔ اس کے بعد دو بار خاتون ٹم کک کے گھر پر جا چکی ہے اور کئی بار اسے دھمکی آمیز پیغامات بھیج چکی ہے۔ کئی پیغامات میں اس نے ٹم کک کو پستول اور گولیوں کی تصاویر بھیجیں۔

ایپل نے امریکی ریاست کیلیفورنیا کے شہر سانتا کلارا کی ایک عدالت میں اس خاتون کے خلاف مقدمہ درج کرایا۔ اس مقدمے میں عدالت نے جولیا لی شوئی کو حکم دیا ہے کہ وہ ٹم کک سے دور رہے۔ مقدمے کی دستاویزات سے معلوم ہوا ہے کہ خاتون نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر ایک ٹویٹ کی جس میں اس نے ٹم کک کی اہلیہ ہونے کا دعویٰ کیا اور کہا کہ وہ ٹم کک کے دو جڑواں بچوں کی ماں بھی ہے۔

ٹم کک کو بھیجی گئی ای میلز میں خاتون نے اسے ذہنی و جسمانی تشدد کا نشانہ بنانے اور اپنے گھر پر قابض ہونے کا مورد الزام بھی ٹھہرایا۔ ایک ای میل میں وہ ٹم کک کو متنبہ کرتی ہے کہ ”فوری طور پر میرے گھر کو خالی کر دو۔“ مبینہ طور پر وہ ورجینیا سے طویل سفر کرکے کیلیفورنیا میں ٹم کک کے گھر دو بار آئی۔ عدالت کی طرف سے خاتون کو متنبہ کیا گیا ہے کہ اس نے کسی طور ٹم کک کے قریب جانے یا اسے ہراساں کرنے کی کوشش کی تو اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

مزید :

سائنس اور ٹیکنالوجی -