بچپن میں ہی فروخت ہوجانے والا بچہ 17 سال بعد والدین کے پاس جاپہنچا لیکن پھر ماں باپ کا ردعمل کیا تھا؟ ایسا انجام کہ ہر آنکھ نم ہوگئی

بچپن میں ہی فروخت ہوجانے والا بچہ 17 سال بعد والدین کے پاس جاپہنچا لیکن پھر ...
بچپن میں ہی فروخت ہوجانے والا بچہ 17 سال بعد والدین کے پاس جاپہنچا لیکن پھر ماں باپ کا ردعمل کیا تھا؟ ایسا انجام کہ ہر آنکھ نم ہوگئی

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) چین میں ماں باپ کی طرف سے دوسری بار دھتکارے جانے کے بعد بدقسمت نوجوان نے موت کو گلے لگا لیا۔ میل آن لائن کے مطابق یہ المناک واقعہ چین کے جزیرے ہینان کے شہر سانیا میں پیش آیا ہے جہاں لیو شیوژاﺅ نامی اس نوجوان کو اس کے ماں باپ نے بچپن میں ہی فروخت کر دیا تھا۔ 17سال بعد یہ بچہ جوان ہو کر اپنے باپ ماں کو تلاش کرکے واپس ان کے پاس پہنچ گیا مگر اس بار بھی اس کے ماں باپ نے اسے اپنانے سے انکار کر دیا جس پر دلبرداشتہ ہو کر اس نے خودکشی کر لی۔

رپورٹ کے مطابق جوان ہونے کے بعد لیو نے چینی سوشل میڈیا پلیٹ فارم وائبو پر اپنے حقیقی ماں باپ کی تلاش شروع کی تھی اور انہیں تلاش کرنے میں کامیاب ہو گیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ اس نے ماں باپ سے مالی مدد مانگی تھی جس پر انہوں نے اسے ایک بار پھر تج دیا۔ لیو نے مرنے سے قبل سوشل میڈیا پر ایک 10ہزار الفاظ پر مبنی خط پوسٹ کیا جس میں اس نے اپنی پوری کہانی دنیا کو سنائی۔

اپنی کہانی میں لیو بتاتا ہے کہ اسے جس جوڑے نے حقیقی ماں باپ سے خریدا تھا، ان کی آتش بازی کی وجہ سے لگنے والی آگ میں جھلس کر موت ہو گئی تھی۔ اس جوڑے نے لیو کو اس وقت اس کے ماں باپ سے خریدا تھا جب اس کی عمر 4سال تھی۔ ان کی حادثاتی موت کے بعد لیو نے اپنے اصل ماں باپ کی تلاش شروع کر دی تھی ۔ لیو کی یہ پوسٹ چینی سوشل میڈیا پر تیزی سے وائرل ہو رہی ہے اور لوگ اس کی المناک موت پر افسوس کا اظہار کر رہے ہیں۔ 

مزید :

ڈیلی بائیٹس -