ایم کیو ایم کے خلاف طاقت کا استعمال ،  تحریک انصاف کے رہنماؤں کی شدید الفاظ میں مذمت

ایم کیو ایم کے خلاف طاقت کا استعمال ،  تحریک انصاف کے رہنماؤں کی شدید الفاظ ...
ایم کیو ایم کے خلاف طاقت کا استعمال ،  تحریک انصاف کے رہنماؤں کی شدید الفاظ میں مذمت
کیپشن: ایم پی اے صداقت حسین کی گرفتاری کا منظر
سورس: Screen Grab

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) متحدہ قومی موومنٹ پاکستان (ایم کیو ایم) کے پر امن احتجاجی مظاہرے پر سندھ پولیس کی جانب سے طاقت کے بے رحمانہ استعمال  کی تحریک انصاف نے شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے اپنے بیان میں کہا کہ جمہوریت کے لبادے میں پیپلزپارٹی کا آمرانہ طرزِ حکومت نہایت قابل مذمت ہے، دستور پاکستان شہریوں کو پرامن احتجاج کا حق دیتا ہے، طاقت کے استعمال کے ذریعے حق اختلاف کو  دبانے کی پیپلز پارٹی کی روش شرمناک ہے۔

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری  کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم کے پر امن احتجاج پر سندھ حکومت کی غنڈہ گردی کی شدید مذمت کرتے ہیں، ایسے وقت میں جب پی ایس ایل جیسا ایونٹ ہونے جا رہا ہے اس پر تشدد واقعے کا کوئی جواز نہیں تھا، پی ٹی آئی سندھ کی لیڈرشپ اس واقعے کا بغور جائزہ لے رہی ہے اور ہماری تمام حمایت ایم کیو ایم کے ساتھ ہے۔

وزیر مواصلات مراد سعید نے اپنے بیان میں چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کو مخاطب کرکے کہا "فرزند زرداری تو یہ ہے آپ کی جمہوریت؟ زرداری لیگ کے کالے قوانین اور کرپشن کے اوپر بات کرنے والوں کو یا تو تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے یا عزیز میمن کی طرح قتل کر دیا جاتا ہے۔"

پولیس گردی کے واقعے پر وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی روابط ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ آج کراچی میں ایم کیو ایم کے ممبران پر جس طرح سے تشدد کیا گیا وہ قابل مذمت ہی نہیں قابل شرم بھی ہے۔ پی پی پی خود ہر جگہ مارچ کرنا چاہتی ہے اور خود مخالفین کو برداشت کرنےکا حوصلہ تک نہیں۔ ہم اس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں،  ایسے رویے  قابل شرم ہیں،  پی پی حکومت کو شرم آنی چاہیے۔

ایم کیو ایم پر پولیس تشدد کی پی ٹی آئی سندھ کی قیادت نے بھی شدید الفاظ میں مذمت کی ۔ اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ نے کہا کہ کالے بلدیاتی قانون کے خلاف ایم کیو ایم پاکستان کی ریلی کو حکومتی مشینری سے روکنے اور طاقت کے استعمال کی مذمت کرتے ہیں۔ احتجاج کرنا ہر سیاسی جماعت کا جمہوری حق ہے،  سیاسی کارکنان پر تشدد آمرانہ ذہنیت کی نشانی ہے ، کالے بلدیاتی قانون کے خلاف ہر آئینی راستہ اختیار کریں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان کے منتخب رکن سندھ اسمبلی صداقت حسین کو سندھ پولیس کی جانب سے وزیراعلیٰ سندھ اور وزیرداخلہ سندھ مراد علی شاہ کے حکم پر تذلیل و تشدد کا نشانہ بنایا گیا ، آمروں کی پیداوار جماعت کے آمرانہ انداز کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے۔

تحریک انصاف کے رکن سندھ اسمبلی ارسلان تاج نے سندھ پولیس کے تشدد پر کہا کہ جمہوریت کے راگ گانے والی پیپلز پار ٹی جو پہلے اساتذہ ، نرسز و خواتین پر ڈنڈے برساتی نظر آئی آج اراکین اسمبلی پر بھی ڈنڈے برسائے۔مراد علی شاہ ایک ڈکٹیٹر بن چکا ہے۔ یہ سائیں سرکار سمجھ رہی ہے پولیس ان کے گھر کی لونڈی ہے۔

خیال رہے کہ ایم کیو ایم کی وزیر اعلیٰ سندھ  ہاؤس کے باہر ریلی پر پولیس نے بدترین تشدد کیا جس کے نتیجے میں ایم کیو ایم کے اراکین اسمبلی سمیت متعدد کارکنان زخمی ہوئے جن میں خواتین بھی شامل ہیں۔  سندھ پولیس نے ایم کیو ایم کے ایم پی اے صداقت حسین کو زخمی حالت میں ہی گرفتار بھی کرلیا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -سندھ -کراچی -