اسلام آباد یکم اگست سے فوج کے حوالے کرنے کا فیصلہ، فوج ضلعی انتظامیہ کی مدد کیلئے ’محدود مدت‘ کیلئے بلائی گئی: ترجمان وزارت داخلہ

اسلام آباد یکم اگست سے فوج کے حوالے کرنے کا فیصلہ، فوج ضلعی انتظامیہ کی مدد ...
اسلام آباد یکم اگست سے فوج کے حوالے کرنے کا فیصلہ، فوج ضلعی انتظامیہ کی مدد کیلئے ’محدود مدت‘ کیلئے بلائی گئی: ترجمان وزارت داخلہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزارت داخلہ نے فوج کو 90 دنوں کیلئے اسلام آباد تعینات کرنے کی خبروں کی تردید کی ہے اور کہا ہے کہ امن وامان کو یقینی بنانے کیلئے فوج کو ’محدود مدت‘ کیلئے طلب کیا گیا ہے، فوج کو کوئیک ریسپانس فورس کے طور پر استعمال کیا جائے گا۔ وزارت داخلہ کے ترجمان نے کہا کہ فوج کو اسلام آباد کی انتظامیہ کی مدد کیلئے آرٹیکل 245 کے تحت کیا گیا ہے، فوج کے دستے ایئرپورٹ سمیت دیگر حساس مقامات پر ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی مدد کیلئے اسلام آباد میں موجود رہیں گے اور کوئیک رسپانس فورس کے طور پر کام کریں گے۔ ترجمان نے مزید کہا کہ اگر چاروں صوبائی دارالحکومتوں میں بھی فوج کی ضرورت ہو تو وہاں پر بھی اسی ماڈل کے تحت کارروائی عمل میں لائی جائے گے اور اسے آئین کے آرٹیکل 245 کے تحت مدد اور تحفظ حاصل ہوگا۔
واضح رہے کہ اس سے قبل وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا تھا کہ سلام آباد میں امن وامان کی صورتحال کے پیش نظر یکم اگست سے تین ماہ کیلئے فوج تعینات کرنے کافیصلہ کرلیاہے اوراِس ضمن میں ریکوزیشن دے دی گئی ہے۔ انہوں نے بتایاکہ آرٹیکل 245نافذ کردیاگیاہے اوراِسی کے تحت فوج طلب کی گئی ہے اور وہ سیکیورٹی معاملات سنبھالے گی۔تحریک انصاف کے لانگ مارچ سے متعلق سوال کے جواب میں ان کاکہناتھاکہ ڈی سی اسلام آباد کو تاحال درخواست موصول ہوئی اور نہ ہی اجازت دینے کاکوئی فیصلہ ہوا، درخواست موصول ہونے کے بعد غور کیاجائے گا۔
یادرہے کہ تحریک انصاف نے 14اگست کو اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ کا اعلان کررکھاہے اوراِس کے توڑ کیلئے حکومت نے بھی جشن آزادی کی تقریبات پورا ایک ماہ منانے کااعلان کررکھاہے۔