غزہ پر حملے کی وجہ، اسرائیل کی اپنی ہی پولیس نے جھوٹ کا پول کھول دیا

غزہ پر حملے کی وجہ، اسرائیل کی اپنی ہی پولیس نے جھوٹ کا پول کھول دیا
غزہ پر حملے کی وجہ، اسرائیل کی اپنی ہی پولیس نے جھوٹ کا پول کھول دیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لندن (نیوز ڈیسک) پچھلے ماہ تین اسرائیلی لڑکوں کے اغواءاور ہدایت کی ذمہ داری حماس پر عائد کرتے ہوئے اسرائیلی فوج نے غزہ پر حملہ کردیا جس میں اب تک 800 سے زائد معصوم شہری جاں بحق اور ہزاروں زخمی ہوچکے ہیں اور اب اسرائیلی پولیس نے اقرار کرلیا ہے کہ لڑکوں کے قتل کا حماس سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ یہ بات اسرائیلی پولیس کے فارن پریس نمائندہ چیف انسپکٹر مکی روزن فیلڈ نے برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کو بتائی۔ اسرائیلی لڑکوں کے اغواءکے متعلق پولیس کی تحقیقات کا کوئی نتیجہ سامنے آنے سے پہلے ہی وزیراعظم، بینجمن نیتن یاہو نے حماس کو اس کا ذمہ دار قرار دے دیا تھا اور اس واقعے کو بنیاد بنا کر اسرائیل نے غزہ پر حملہ کردیا۔ اسرائیلی پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکوں کو جس گروپ نے قتل کیا وہ اپنے طور پر کام کررہا تھا اور اس کا حماس سے تعلق نہیں ہے۔ یہ بھی تسلیم کیا گیا کہ حماس کے پاس لڑکوں کے اغواءکے متعلق کوئی معلومات نہ تھیں۔ دوسری جانب اسرائیلی حکومت اپنے دعوے کا جھوٹ روز روشن کی طرح عیاں ہونے کے باوجود فلسطینی عوام پر بموں اور میزائلوں کی بارش جاری رکھے ہوئے ہے۔