الیکشن کمیشن کے ارکان مستعفی ہو جائیں ،عمران خان،تحریک انصاف نے کمیشن کا فیصلہ مان کر احسان نہیں کیا ،پرویز رشید

الیکشن کمیشن کے ارکان مستعفی ہو جائیں ،عمران خان،تحریک انصاف نے کمیشن کا ...

ا سلام آباد (آئی این پی ) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے جوڈیشل انکوائری کمیشن کی رپورٹ کو تسلیم کرتے ہوئے اسے نئے پاکستان کی سیاسی جدوجہد کا حصہ قرار دیا اور کہاکہ قو م سے معافی میں نہیں نوازشریف مانگیں ، رپورٹ کے مطابق الیکشن کمیشن کے انتخابات کے شفاف اور قانون کے مطابق ممبران ناکام رہے اس لئے الیکشن کمیشن فوری طور پر مستعفی ہوجائے ، میں اپنی زبان پرقائم ہوں اور جوڈیشل کمیشن کا فیصلہ قبول کرتاہوں ،جوڈیشل کمیشن کی کارروائی پر فخر ہے تاہم اس نے اپناکام ادھورا چھوڑ دیا ہے ، اس پر ضرور تکلیف ہوئی ، رپورٹ کے بعد ہمارے بھی کچھ سوالات ہیں ، ڈھائی کروڑ بیلٹ پیپرزکاریکارڈ ہی موجود نہیں ، پھر بتایا جائے کہ یہ فیصلہ کیسے ہوگا کہ الیکشن کتنا قانون کے مطابق تھااور کتنا نہیں، دھرنے کے پیچھے کوئی اور نہیں حکومت ذمہ دارہے، وہ 4حلقے کھول دیتی توہم دھرنانہ دیتے‘انکوائری کمیشن کے فیصلے کیخلاف سڑکوں پر احتجاج نہیں کریں گے ‘رپورٹ کے بعد قومی اسمبلی کو آئینی و قانونی تصور کرتے ہیں اجلاسوں میں شرکت کریں گے ۔وہ پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران جوڈیشل انکوائری کمیشن کی تحقیقاتی رپورٹ پر باضابطہ ردعمل کا اظہار کررہے تھے ۔ اس موقع پر عمران خا ن نے کہاکہ جوڈیشل کمیشن کی رپورٹ پر مایوسی کی ضرورت نہیں بلکہ یہ ایک نئے پاکستان کی جدوجہد کی بنیا دہے۔ ہماری ساری جدوجہد کا مقصد عام پاکستانی کے ووٹ کے تقدس کو بحال ک۔نا تھا اب مایوس ہونے و الے اپنے سر کو فخر سے بلند کریں۔

مزید : صفحہ اول