؂ہلد ی موسم گرما کی نفع بخش فصل ہے:ماہرین

؂ہلد ی موسم گرما کی نفع بخش فصل ہے:ماہرین

سلانوالی (اے پی پی) زرعی ماہرین نے بتا یا کہ ہلد ی موسم گرما کی نفع بخش فصل ہے یہ سالن میں استعمال کرکے سالن کے رنگ اور ذائقہ کوبہتر بناتی ہے ۔ حکما کے نزدیک یہ خون کو بھی صاف کرتی ہے ہلدی کیلئے مرطوب و متعد ل آب و ہوا اچھی ہوتی ہے ۔پنجاب میں ہلدی وسط اپریل تک بوئی جاسکتی ہے اور ہلدی کی فصل جنوری میں بر د اشت کے قابل ہوتی ہے۔ ہلدی کیلئے زر خیز میرازمین جس میں پانی کا نکا س بہتر ہو اچھی رہتی ہے جس کھیت میں ہلدی کا شت کر نا ہو ں ا س میں ستمبر میں برسیم کا شت کریں بر سیم کی پہلی 2کٹائیاں فروخت کردیں تیسری کو کھیت میں ہل چلا کر دبادیں اور زمین کو ا چھی طرح ہموار کرلیں۔

ہموار زمین پر 20سے 25ٹن گوبر کی گلی سڑ ی کھادڈالیں اورزمین کوخوب تیارکریں۔ کاشت سے پہلے کھیت میں 5بور ی سپر فاسفیٹ اورایک بوری امونیم نائٹریٹ کھاد فی ایکڑ بکھیر کر ہل چلائیں ایک ایکڑ کا شت کرنے کیلئے ہلدی کے گھچوں میں سے 600سے 700کلوگرام ہلدی کی درمیان وا لی موٹی گھٹیاں چن لیں اور چا کو سے ان کے 2ٹکڑے کرلیں ہموار زمین پر نصف میٹر قطاروں میں پود ے سے پودے کا فاصلہ 15سے 20سینٹی میٹر رکھ کر کاشت کریں۔ ہلدی کے بیج کو کھر پے سے 5سینٹی میٹر گہرا دبادیں اور کا شت کے بعد کھیت پر کما د کی کھور ی کی 2سے 3سینٹی میٹر موٹی تہ بیچا دیں کھوری کھیت میں نمی کو برقرار رکھتی ہے، دن کے وقت زمین کا در جہ حرارت کم رہتا ہے بیج جلد اور ز یادہ اگتا ہے اور پو دے اچھی طرح نشو ونما پاتے ہیں ہلدی کو آدھا میٹر کے فاصلہ پر بنائی ہوئی 12سے 15سینٹی میٹر اونچی پٹریوں پر بھی کا شت کیا جاسکتا ہے۔

مزید : کامرس