کولیشن سپورٹ فنڈ کی رقم جلد پاکستان کو جاری کی جائے: پاک یوایس بزنس کونسل

کولیشن سپورٹ فنڈ کی رقم جلد پاکستان کو جاری کی جائے: پاک یوایس بزنس کونسل

اسلام آباد (اے پی پی) پاک یو ایس بزنس کونسل نے امریکا کی جانب سے کولیشن سپورٹ فنڈ کی مد میں پاکستان کے روکے جانے والے 300ملین ڈالر کے فنڈز فوری طورپر جاری کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کو باہمی تعلقات کار اورہم آہنگی کوفروغ دینے کیلئے اقدامات کرنا چاہئیے اور معمولی تنازعات کو دونوں ممالک کے درمیان قائم دیرینہ تعلقات اوردوستی کے آڑے نہیں آنا چاہئیے۔ پاک یوایس بزنس کونسل کے بانی ویونائٹیڈ بزنس گروپ کے چئیرمین افتخارعلی ملک نے بھوٹان سے وطن واپسی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو میں کہاکہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان نے سب سے زیادہ جانی اورمالی نقصان کا سامنا کیاہے،اس جنگ میں ہمارے 60ہزار سے زائد شہری اورسیکیورٹی فورسز کے افسر اورجوان جام شہادت نوش کرچکے ہیں، ایسے حالات میں ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے کولیشن سپورٹ فنڈ کی مد میں پاکستان کی 300ملین ڈالرکی امداد کو روکنا منصفانہ اقدام ہے۔انہوں نے کہاکہ خطے میں امن و استحکام کے قیام کیلئے پاکستان نے مشکلات اوررکاوٹوں کے باوجود بھرپور اقدامات کئے ہیں اور مستقبل میں بھی پاکستان اپنا مثبت کردار ادا کریگا۔سارک چیمبر کے ینگ انٹرپرینیورز کے چئیرمین شہریارعلی ملک اور ایف پی سی سی آئی کے سابق وائس چئیرمین حمید اختر چاڈا بھی اس موقع پر موجود تھے۔انہوں نے کہاکہ افغانستان میں امریکی افواج کے کمانڈر جنرل جوہن نکولسن نے آرمی چیف قمرباجوہ سے ملاقات میں دہشت گردی کی لعنت کے خاتمے کیلئے پاکستان کے اقدامات کی تائید کی تھی۔

اور قرار دیا تھا کہ افغانستان میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی حمایت کے بغیر کامیابی ناممکن تھی، پاکستان اس ضمن میں اب بھی اپنا کردار ادا کررہاہے اور دنیاء ہماری قربانیوں کو تسلیم کررہی ہے۔انہوں نے کہاکہ قیمتی جانی نقصان کے علاوہ 2002سے لیکر 2016تک دہشت گردی کے خلاف جنگ اور انتہاپسندی کی کارروائیوں میں پاکستان کا 118.3ارب روپے کا نقصان ہوچکاہے۔انہوں نے کہا کہ صدر ٹرمپ کی انتظامیہ کو پاکستان کے ساتھ تجارت، سرمایہ کاری اوردیگر شعبوں میں تعلقات کو فروغ دینے اور اس کے ساتھ ساتھ پاکستانی مصنوعات کوامریکی منڈیوں تک براہ راست دینے کیلئے اقدامات کرنا ہوگے۔انہوں نے امریکا میں مقیم پاکستانی نژاد تاجروں اورصنعت کاروں سے ملک میں سرمایہ کاری کیلئے فراہم کردہ سازگار ماحول سے استفادے کا مشورہ دیا۔

مزید : کامرس