وزیر داخلہ کی پریس کانفرنس ، پھر ملتوی، لاہور دھماکہ کے باعث موخر کی ہے چودھری نثار

وزیر داخلہ کی پریس کانفرنس ، پھر ملتوی، لاہور دھماکہ کے باعث موخر کی ہے ...

اسلام آباد سے ملک الیاس

لاہورکے دھماکے میں ہونیوالے بھاری جانی نقصان کے بعد ملک بھر کی طرح وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی فضا بھی سوگوار ہے اور سکیورٹی بڑھادی گئی ہے داخلی اور خارجی راستوں پر چیکنگ بھی سخت کردی گئی، صدرمملکت ممنون حسین،وزیراعظم محمد نواز شریف نے لاہور میں دھماکہ کی پرزر مذمت کرتے ہوئے قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔ وزیراعظم نے زخمیوں کو ہر ممکنہ بہترین طبی سہولیات کی فراہمی کی ہدایت کی اور ان کی جلد صحت یابی کے لئے دعا کی۔ چیئرمین سینیٹ میاں رضاربانی ،سپیکر قومی اسمبلی سر دار ایاز صادق، سینیٹ میں قائد ایوان راجہ محمد ظفرالحق ،قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف قومی اسمبلی سید خورشید احمد شاہ ،وزیر مملکت برائے اطلاعات‘نشریات و قومی ورثہ مریم اورنگزیب، چوہدری اعتزاز احسن، ڈپٹی سپیکر مرتضی جاوید عباسی نے لاہور میں ہونے والے دھماکے میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ،جاں بحق ہونیوالوں کے لواحقین سے تعزیت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے خصوصی دعا کی ہے ۔وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات و قومی ورثہ مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ میں وفاقی حکومت‘ تمام ریاستی ادارے اور صوبے ایک ہی صفحے پر ہیں‘ آپریشن ضرب عضب، نیشنل ایکشن پلان، آپریشن ردالفساد اور خیبر فور شروع کیے گئے جن سے اہم کامیابیاں بھی حاصل ہوئی ہیں‘ موجودہ حکومت ملک سے دہشت گردی کو جڑ سے ختم کرنے کے لیے پرعزم ہے ، دہشت گردوں اور ان کے حامیوں کے خلاف کارروائیوں کی راہ ہموار کی ہے، چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان سمیت تحریک انصاف کی اعلی قیادت نے بھی لاہور میں دھماکے پر شدید الفاظ میں مذمت کی۔ عمران خان نے قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے رنج کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ واقعے میں ملوث افراد کسی نرمی اور رعایت کے مستحق نہیں ہیں صوبائی حکومت زخمیوں کے علاج معالجے کیلئے بہترین اقدامات اٹھائے، شاہ محمود قریشی ،جہانگیر خان ترین نے بھی شدید دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ امن کے دشمن پاکستان میں خون کی ہولی کھیلنا چاہتے ہیں، لاہور دھماکے کے بعد سی پی او راولپنڈی کی ہدایت پر راولپنڈی میں ڈی ایس پی صاحبان نے اپنے اپنے علاقوں میں سیکیورٹی پوائنٹس کو چیک کیا اور سی پی او کی ہدایت کے مطابق مشکوک گاڑیوں،افراد اور رہائشیوں کو خاص طور پر چھان بین کرنے کی ہدایت کی۔

پانامہ کیس کا فیصلہ محفوظ ہونے کے بعد شہر اقتدار اسلام آباد کے سیاسی معاملات میں ٹھہراؤ ساآ گیا، سب کی نظریں پانامہ اسکینڈل کے حوالے سے عدالت کے فیصلے پرلگی ہوئی ہیں، سیاسی جماعتوں نے بھی اپنی سر گرمیوں کو محدود کر دیا ہے، آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان پانامہ اسکینڈل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد کیا جائے گا، شاہراہ دستور پر معمول کی سرگرمیوں کا سلسلہ شروع ہو گیاہے، ہیجان اور اضطراب میں کمی آئی ہے ،اداروں میں سرکاری امور کی انجام دہی کا سلسلہ معمول پر آ تا جارہا ہے ،اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے وزیراعظم کے استعفے کا مطالبہ زورپکڑرہا ہے جبکہ دوسری جانب وزیراعظم ہاوس کے ترجمان مصدق ملک کا دوٹوک موقف سامنے آیا ہے کہ وزیراعظم کسی صورت استعفیٰ نہیں دیں گے،4,4سیٹیں رکھنے والی بونی جماعتوں کے کہنے پر استعفے کا جواز نہیں، چوہدری نثار وزیراعظم کے مخلص ساتھی اور پرانے رفیق ہیں، وہ کابینہ یا پارٹی چھوڑ کر نہیں جا رہے۔ چوہدری نثار جو بات بھی کرتے ہیں وہ حکومت، وزیراعظم اور پارٹی مفاد میں کرتے ہیں، مسلم لیگ(ن) ایک جمہوری جماعت ہے، اختلاف رائے سب کا حق ہے انکا کہنا تھا کہ وزیراعظم کیلئے نئے ناموں کے سوال پر کہتا ہوں کہ تین ناموں پر اتفاق ہے، جن نئے ناموں پر اتفاق ہے وہ نواز شریف، نواز شریف اورنواز شریف ہیں، قومی اسمبلی میں قائدحزب اختلاف سید خورشید شاہ کاکہنا تھا کہ مسلم لیگ(ن) سپریم کورٹ کو دباؤ میں لانا چاہتی ہے، میں نہیں سمجھتا کہ سپریم کورٹ کوئی فیصلہ دباؤ میں دے گی، ادارے اتنے کمزور نہیں کہ وزراء ان کو ڈرا سکیں۔دوسری جانب تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی مبینہ نامکمل منی ٹریل پر بھی بیان بازی کا سلسلہ زوروں پر ہے ن لیگی اراکین اسمبلی اسے آڑے ہاتھوں لے رہے ہیں ،دانیال عزیز،طلال چوہدری اورحنیف عباسی کا کہنا تھا کہ ن لیگی قیادت نے اپنی تین نسلوں کی منی ٹریل دیدی مگر عمران خان صرف20سال کی منی ٹریل دینے میں ناکام ہوگئے ،جبکہ تحریک انصاف کے ترجما ن کا دعویٰ سامنے آیا ہے کہ عمران خان کی منی ٹریل مکمل ہو گئی،منی ٹریل کی تمام بینکنگ دستاویزات حاصل کرلی گئیں،فلیٹ کی ادائیگی اورکاؤنٹی کی ادائیگیوں کابینکنگ ریکارڈشامل ہے ،کیری پیکرسیریزکی بھی بینکنگ ٹریل عدالت کوفراہم کی جائیگی،اشتہارات سے آمدن کابینکنگ لین دین عدالت میں جمع کرایاجائیگا،متعلقہ کاغذات عدالت کودینے کیلئے وکلا کے حوالے کر دیئے ہیں، ایک لاکھ سترہ ہزار پاؤنڈ کی تفصیلات مانگی تھی ہم نے ساڑھے تین لاکھ کی منی ٹریل پیش کر دی، تحریک انصاف کے سینئر رہنما و ترجمان نعیم الحق اور فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ن لیگ نے ایک سازش کے تحت حنیف عباسی سے عمران خان کے خلاف سپریم کورٹ میں مقدمہ کرایا۔ کیس میں عمران خان کی بنی گالا اراضی اور غیر ملکی فنڈنگ کا معاملہ اٹھایا گیا ہے ،ادھر تحریک انصاف کے الزامات کاجواب دیتے ہوئے پیپلز پارٹی کے رہنما سینیٹر فرحت اللہ بابر کا کہنا تھاکہ پاکستان پیپلز پارٹی پاکستان میں اکٹھے کئے ہوئے فنڈ استعمال کرتی ہے ، پی ٹی آئی غلط تصورات قائم کرنے کی بجائے پاکستان میں اپنی سرگرمیوں کیلئے حاصل کی ہوئی رقم پر اٹھنے والے سوالات کے جواب دے کیونکہ پی ٹی آئی مبینہ طور پر قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پاکستان میں سیاسی سرگرمیوں کے لئے غیرملکی فنڈنگ لے کر رہی ہے،

وزیرداخلہ چوہدری نثارعلی خان کی پریس کانفرنس کا سب کوانتظار تھا کہ وہ اپنی پریس کانفرنس میں کیا اعلان کرتے ہیں تاکہ ان کے حوالے سے جو قیاس آرائیاں کی جارہی تھیں وہ ختم ہوسکیں مگر وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے لاہور دھماکے کے باعث پریس کانفرنس مختصر کرتے ہوئے سیاسی معاملات پر گفتگو نہیں کی انکا کہنا تھا کہ گزشتہ چند روز بڑے کرب میں گزرے، وہ صرف میری صحت کے حوالے سے نہیں بلکہ کئی اور معاملات اور مسائل تھے جو میڈیا سے چھپے ہوئے نہیں، گزشتہ روز جسمانی طور پر اس پوزیشن میں نہیں تھا کہ اٹھ سکوں، اس لئے پریس کانفرنس ملتوی کرنا پڑی، آج بھی میری صحت ٹھیک نہیں،سوچا کہ پریس کانفرنس کر کے خود کو کرب سے نکالوں ، لاہور واقعہ کے بعد سیاسی معاملات پر اظہار خیال کرنا مناسب نہیں ،ایک طرف انسانی جانوں کا ضیاع ہوا اورملک کا وزیر داخلہ سیاسی معاملات لے کر بیٹھ جائے یہ مناسب نہیں،جس ایشو پر میں نے اظہار خیال کرنا ہے اسے منسوخ نہیں ملتوی کر رہا ہوں،پمز میں صحافیوں کے ساتھ بدسلوکی کے واقعہ پر کمیٹی بنا دی جو 24گھنٹے میں رپورٹ دے گی۔

مزید : ایڈیشن 2