سیف سٹی منصوبہ کہاں گیا: چودھری سرور

سیف سٹی منصوبہ کہاں گیا: چودھری سرور

لاہور( نمائندہ خصوصی ) سابق گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور نے کہا ہے کہ سیف سٹی پر اجیکٹ میں حکمران سٹی کو نہیں خود کو ’’سیف ‘‘کر رہے ہیں ‘12ارب کا سیف سٹی منصوبہ کاغذوں تک محددود نظر آتا ہے ‘کر پشن کر نیوالے اور دہشت گرد ایک ہی سکے کے دورخ ہیں ‘پنجاب میں کل نہیں آج ہی مستقل آئی جی پنجاب کی تعیناتی کی جائے ‘پنجاب میں رینجرز کو محدوود نہیں مکمل اختیارات دینا ہوں گے‘لاہوردہشت گردی کے متاثرین کے غم میں تحر یک انصاف برابر کی شریک ہے ۔ وہ منگل کے روز لاہورمیں پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات شفقت محمود ‘رکن پنجاب اسمبلی میاں اسلم اقبال اور دیگر کے ہمراہ جنرل ہسپتال میں لاہور دہشت گردی کے زخمیوں کی عیادت کے بعدمیڈیا سے گفتگو کر رہے تھے چوہدری محمدسرور نے کہا کہ ارفع کر یم ٹاور کے قر یب جہاں دہشت گردی ہوئی اس علاقے میں وزیر اعظم اور وزیر اعلی کے کیمپ آفس ہونے کی وجہ سے اسکو ریڈ زون ہی سمجھا جاتا ہے مگر جہاں ریڈ زون محفوظ نہیں وہاں باقی علاقوں کا کیا ہوگا؟۔ انہوں نے کہا کہ لاہور میں سیف سٹی پروگرام میں ابھی تک8ہزار میں سے صرف1500کیمرے لگے ہیں اور لاہور میں جہاں دہشت گردی ہوئی وہاں کیمر ے ہی خراب نکلے ہیں کیا یہ سیف سٹی پروجیکٹ ہے ؟اصل میں حکمران سٹی کو نہیں خود محفوظ بنانے کی پالیسی پر گامزن ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں رینجرز کو حکومت نے مکمل اختیارات نہیں دےئے وہ پولیس کے بغیر کہیں آپر یشن اور کاروائی نہیں کرسکتی ہمارا مطالبہ ہے کہ رینجرز کو مکمل اختیارات دےئے جائے ورنہ امن خواب رہیگا دہشت گردوں کے سہولتوں کارووں اور انکو شہر میں داخل ہونے سے روکنے کی ذمہ دار ی حکومتی اداروں کی ہے جو ناکام نظر آتے ہیں ۔

مزید : صفحہ آخر