پنجاب بار کونسل اور لاہور ہائیکورٹ بار کی اپیل پر وکلاء نے یوم سوگ منایا

پنجاب بار کونسل اور لاہور ہائیکورٹ بار کی اپیل پر وکلاء نے یوم سوگ منایا

لاہور(نامہ نگار خصوصی/نامہ نگار)لاہور دہشت گردی واقعہ کے خلاف پنجاب بار کونسل اور لاہور ہائیکورٹ بار کی اپیل پر وکلاء نے یوم سوگ منایا اور ہڑتال کی تاہم فوری نوعیت کے مقدمات میں وکلاء صبح ساڑھے10بجے تک بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ کرعدالتوں میں پیش ہوئے۔ واقعہ کے خلاف وکلاء نے جنرل ہاؤس کا مذمتی اجلاس منعقد کر کے دہشت گردی کی شدید مذمت کی۔دہشت گردی واقعہ کے خلاف وکلاء نے بار رومز کی چھتوں پر سیاہ پرچم لہرائے اوردہشت گردی واقعہ کی پرزور الفاظ میں مذمت کی۔ جنرل ہاؤس کے مذمتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے لاہور ہائیکورٹ بار کے صدرچودھری ذوالفقار نے کہا کہ وحشی درندوں نے معصوم جانوں کو خون میں نہلا دیا۔ حکمران اپنی حفاظت پر ساری توجہ مرکوز رکھے ہوئے ہیں اور عوام کو بے یارو مددگار بھیڑ بکریوں کی طرح حالات کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے۔ انہوں نے سیکورٹی اداروں کو مزید فعال کرنے اور شہداء کے ورثا اور زخمیوں کی مالی معاونت کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی سے نمٹنے کے لئے پوری قوم سیسہ پلائی دیوار ثابت ہو گی۔اجلاس سے ہائی کورٹ بار کے فنانس سیکرٹری محمد ظہیر بٹ ،لیاقت علی قریشی ، محمد اسلم زار ، وسیم اے بھدر ، محمد اظہر صدیق ایڈووکیٹس نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر میں آزادی کے متوالے جب بھی انڈیا پر دباؤ بڑھاتے ہیں تو 7لاکھ انڈین آرمی کی موجودگی میں مودی سرکار بوکھلاہٹ میں ’’را‘‘ کے ذریعہ پاکستان میں دہشت گردی کی لہر میں اضافہ کر دیتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر