پچیس بیویاں رکھنے کی سزا صرف پانچ سال

پچیس بیویاں رکھنے کی سزا صرف پانچ سال
 پچیس بیویاں رکھنے کی سزا صرف پانچ سال

  

وینکوور۔ کینیڈا (محسن عباس۔ بیوروچیف) " میرا جرم صرف اتنا ہے کہ میں اپنے مذہب کے مطابق زندگی گزار رہا ہوں"۔ یہ الفاط تھے کینیڈا کے صوبے برٹش کولمبیا کے انتہائی دور افتادہ اورچھوٹے سے قصبے باونٹی فل کے رہائشی پادری ونسٹن بلیک مورکے جن کی پچیس بیویاں ہیں۔ صوبے برٹش کولمبیا کی ایک عدالت نے اس پادری کوکثرت ازواج کے قانون پر پابندی کی خلاف ورزی کرنے پر سزا سنائی ہے۔ اس پادری نے ساتھ ایک دوسرے پادری جیمز اولرکو بھی سزا دی گئی ہے جس کی صرف پانچ بیویاں ہیں۔ اس کیس پر کئی سال سے کاروائی جاری تھی۔ عدالت کے فیصلے کے باوجود پادری ونسٹن بلیک موراپنے موقف پر قائم ہیں اور ان کے وکیل کا کہنا ہے کی وہ کینیڈا میں کثرت ازواج پر پابندی کے قانون کو چیلنج کریں گے۔ ونسٹن بلیک مور کا کہنا ہے کہ یہ مذہبی نہیں بلکہ سیاسی سزا ہے اور ان کا عدالت کو چیلنج اس قانون میں تبدیلی لانے میں اہم کردار ادا کرے گا۔ یاد رہے کہ کینیڈا میں کثرت ازواج پر پابندی کا قانون رائج ہے۔ دونوں پادری ابھی ضمانت پر ہیں اور ان کو پانچ سال جیل کی سزا کاٹنی ہوگی۔ ان کے خلاف سن سوہزار چودہ میں دوسری دفعہ کیس درج کیا گیا جب ان کے محلے داروں نے شکائت کی کہ یہ افراد جنسی جرائم، بچوں کی کینیڈا اورامریکہ کے درمیان سمگلنگ اور کثرت ازواج جیسے جرائم میں ملوث ہیں۔ بیس سال قبل بھی ان دونوں افراد کواسی طرح کے الزامات کے تحت عدالت کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

مزید : صفحہ اول