فریقین کے باہمی تنازعات کو رضا مندی کے مطابق حل کرنے کی ضرورت ہے:ڈی پی او کوہاٹ

فریقین کے باہمی تنازعات کو رضا مندی کے مطابق حل کرنے کی ضرورت ہے:ڈی پی او ...

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) ڈسپیوٹ ریزولوشن کونسل (ڈی آر سی)نے پختونو ں کے روایتی جرگہ نظام کے اصل روح میں مزید نکھار پیدا کرکے عوامی محافظ کا روپ دھار لیا ہے ۔شہریوں کے باہمی تنازعات کو افہام و تفہیم سے حل کرکے خونریزی کے سینکڑوں واقعات رونما ہونے سے قبل روکنے میں تنازعات کے حل کونسلوں کا کلیدی کردار رہا ہے۔ڈی آر سی کو مکمل قانونی تحفظ حاصل ہے جسکے فیصلے عدالتوں میں بھی قابل قبول ہیں۔ڈی آر سی کے مصالحتی اقدامات عوامی مفاد ، قیام امن اور تحفظ انسانیت کیلئے پیش خیمہ ثابت ہورہے ہیں۔ان خیالات کا اظہار ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کوہاٹ جاوید اقبال نے ڈسپیوٹ ریزولوشن کونسل (ڈی آر سی)کوہاٹ کے جیور ی ہال میں پولیس افسران اور ڈ ی آر سی ممبران کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ڈی پی او نے تمام سرکل ایس ڈی پی اوز اورتھانوں کے ایس ایچ اوز پر زور دیا کہ وہ ڈسپیوٹ ریزولوشن کونسل (ڈی آر سی ) کی طرف سے بھیجے گئے سائلین کی درخواستوں پر فوری مناسب کاروائی عمل میں لاتے ہوئے شہریوں کوانصاف کی جلد فراہمی میں ڈی آرسی کے شانہ بشانہ اپنا کردار ادا کریں۔ انہوں نے کہا کہ فریقین کے باہمی تنازعات کو انکی رضا مندی کے مطابق حل کرنے کیلئے ضروری ہے کہ معاملے کی شفاف اورمکمل چھان بین کیلئے دونوں فریقین کے افراد کو ڈی آر سی کی جیوری کے سامنے لاکر سماعت کا موقع فراہم کیا جائے ۔ڈی پی او نے واضح کردیا انکے دفتر سے بھیجے گئے سائلیں کی درخواستوں کی ڈی آر سی میں سماعت کی خاطر فریقین کی طلبی کیلئے دو مرتبہ سمن جاری کئے جائیں جبکہ طلب کئے جانے کے باوجودد ڈی آر سی کے سامنے پیش نہ ہونے والے افراد کے خلاف کسی بھی معاملے میں قانونی کاروائی کی غرض سے واپس انکے دفتر سے رجوع کیا جائے۔ڈی پی او نے ڈی آر سی کوہاٹ کی آج کے دن تک کارکردگی کے حوالے سے بتایا کہ کونسل کے ممبران کی مصالحتی کوششوں کی بدولت اب تک فریقین کے مابین ایک ہزار کے قریب چھوٹے موٹے تنازعات میں فریقین کی باہمی رضا مندی سے تصفیہ کیا جاچکا ہے جسکی افادیت یہ سامنے آئی ہے کہ خونریزی کے سینکڑوں واقعات رونما ہونے سے قبل ٹال دئیے گئے ہیں۔اجلاس میں ڈی آر سی ممبران کی طرف سے سامنے آنے والے مسائل و مشکلات کا فوری اور مناسب حل تلاش کرنے کیلئے ڈی پی او کوہاٹ نے ڈی ایس پی سٹی کو موقع پر ہدایات جاری کئے۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے شاہد زمان،عماد اعظم ایڈووکیٹ اور غیاث الدین ایڈوکیٹ نے ڈی آر سی کے کردار کو اجاگر کیااور کہا کہ پختون روایات کے عین مطابق ڈی آر سی کے جرگہ نظام کے تحت عوام کے باہمی تنازعات خوش اسلوبی سے پایہ تکمیل تک پہنچ رہے ہیں جسکے باعث تھانوں اور عدالتوں پر مقدمات کا بوجھ روز افزوں کم ہوتا جارہا ہے اور مجرمانہ سرگرمیوں و بدامنی کے سد باب میں نتیجہ خیز کامیابیاں حاصل ہورہی ہیں۔اجلاس میں ڈی ایس پی ہیڈکوارٹر عبدالرشید ،اے ایس پی اویس شفیق،ڈی ایس پی سٹی رضا محمد ،ڈی ایس پی لاچی روخان ذیب ، پراسیکیوشن انسپکٹر اسحاق گل اور تمام تھانوں کے ایس ایچ اوز کے علاوہ ڈی آر سی ممبران صدر ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن جاوید محمد پیجی، شاہد زمان،بریگیڈئیر (ر) رشیدخان،سابق سیکرٹری آر ٹی اے قیصر ناز،ذونل چیف (ر)شجاعت علی خان،کیپٹن (ر)فیروز خان،غیاث الدین ایڈووکیٹ،حافظ مطاہر شاہ،،عماد اعظم ایڈوکیٹ،مسماۃ ذیب النساء ایڈووکیٹ،پرنسپل (ر) نگین حسین ،عابد پراچہ اورسابق چئیرمین کنٹونمنٹ بورڈکوہاٹ سید فائق علی شاہ کے علاوہ دیگر ممبران بھی موجود تھے۔

 

مزید : پشاورصفحہ آخر