پیٹرول سپلائی کرنے والے 12ہزار آئل ٹینکرز میں سے صرف 55فیصد غیر معیاری ہیں :ہائی کور ٹ میں اوگرا کی رپورٹ

پیٹرول سپلائی کرنے والے 12ہزار آئل ٹینکرز میں سے صرف 55فیصد غیر معیاری ہیں ...
پیٹرول سپلائی کرنے والے 12ہزار آئل ٹینکرز میں سے صرف 55فیصد غیر معیاری ہیں :ہائی کور ٹ میں اوگرا کی رپورٹ

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائیکورٹ نے سانحہ احمد پور شرقیہ کیس کی سماعت کے دوران حکم جاری کیا کہ معیار پر پورا نہ اترنے والے آئل ٹینکرز کو پیٹرول سپلائی کے لئے استعمال نہ کیا جائے ۔عدالت میں"اوگرا "کی طرف سے پیش کی گئی رپورٹ کے مطابق پیٹرول سپلائی کرنے والے 12ہزار آئل ٹینکرز میں سے صرف 55فیصد غیر معیاری ہیں اوروہ طے شدہ معیار پر پورا نہیں اترتے۔

عمران خان سیاسی گدھ ہیں، کسی اور کے شکار سے اقتدار کی بھوک نہیں مٹے گی: خواجہ آصف

چیف جسٹس سید منصور علی شاہ نے کیس کی سماعت شروع کی تواوگرا کے وکیل نے جواب داخل کراتے ہوئے کہا کہ آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن معیاری ٹینکرز کو استعمال نہیں کرنا چاہتی ،شیل کمپنی کا آئل ٹینکر اگر ٹرمینل پر چیک ہوتا تو سانحہ نہیں ہونا تھا ،شیل کمپنی نے اپنی ذمہ داری پوری نہیں کی جو احمد پور شرقیہ میں حادثہ کی وجہ بنا۔انہوں نے بتایا کہ شیل کمپنی کے آئل ٹینکر کا فٹنس سرٹیفکیٹ جعلی تھا،آئل ٹینکر کس نے بنایا اس کا کوئی ریکارڈ موجود نہیں،اوگرا نے شیل کمپنی کو ایک کروڑ جرمانہ کیا تھا جو انہوں نے ادا کردیا،سانحہ میں جان بحق اور زخمی افراد کے لواحقین کے لئے بھی شیل کمپنی نے معاوضہ کی رقم ادا کردی۔درخواست گزار نے بتایا کہ احمد پور سانحہ کے بعد پانچ مزید آئل ٹینکر الٹنے کے واقعات رونما ہوچکے ہیں جس پرعدالت نے ڈی آئی جی موٹروے سے استفسار کیا کہ موٹروے پولیس نے آئل ٹینکر کے حادثات سے نمٹنے کے لئے کیا اقدامات کئے،جس پر ڈی آئی جی موٹر وے مرزا فرحان نے کہا کہ ہم نے متعلقہ حکام کو تجاویز بھجوادیں ہیں، انہوں نے اعتراف کیا کہ سانحہ احمد پور شرقیہ کے بعد مزید آئل ٹینکر الٹنے کے واقعات ہوئے۔سانحہ احمد پور شرقیہ میں آئل ٹینکر کی لوہے کی چادر ناقص تھی ،آئل ٹینکر الٹنے کے بعد موٹر وے پولیس نے اپنا کردار ادا کیا تاہم آئل ٹینکر الٹنے کی بڑی وجہ ڈرائیور کی جانب سے ایس او پیز پر عمل نہ کرنا ہے۔محکمہ انسداد دھماکہ خیز مواد کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ بغیر لائسنس کے آئل ٹینکر چلانے والے ڈرائیور کو 5لاکھ سے10لاکھ تک جرمانے کرنے کی تجاویز بھجوادی ہیں۔انہوں نے کہا کہ قوانین میں موجود سقم دور کرنے کے لئے سفارشات کے خلاف آئل ٹینکرز ایسویسی ایشن نے ہڑتال کر رکھی ہے۔عدالت نے ہدایت کی کہ صرف طے شدہ معیار پر پورا اترنے والے آئل ٹینکرز کو ہی پیٹرول سپلائی کے لئے استعمال کیا جائے جس پرمدعاعلیہ کے وکیل نے کہا کہ اگر عدالت نے معیاری آئل ٹینکر کو استعمال کرنے کاحکم دیا تو آئل کی سپلائی رک جائے گی، اوگرا نے شیل کمپنی کو ہی جرمانہ کیا باقی کسی اور کمپنی کے خلاف کاروائی نہیں کی گئی جس پر عدالت نے اوگراکو آئندہ سماعت پر وضاحت پیش کرنے کی ہدایت کی ،درخوات گزار کی طرف سے کہا گیا کہ حکومت کی جانب سے جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین کو دئیے گئے چیک باﺅنس ہونے کی اطلاعات بھی ہیں جس پر عدالت نے سرکاری وکیل کو کہا کہ وہ اس بابت آئندہ تاریخ سماعت پر حکومت سے معلومات اور ہدایات لے کر عدالت کو آگاہ کرے ۔

مزید : لاہور