جسٹس اعجاز الحسن ، وسیم اکرام نے سمن آباد ، حمزہ شہباز نے گوالمنڈی میں ووٹ ڈالا

جسٹس اعجاز الحسن ، وسیم اکرام نے سمن آباد ، حمزہ شہباز نے گوالمنڈی میں ووٹ ...

لاہور (جنرل رپورٹر) الیکشن 2018ء میں لاہور سے قومی اسمبلی کے 14 اور پنجاب اسمبلی کی 30 نشستوں پر ہونے والے انتخابات کے امیدواروں سمیت دیگر اہم شخصیات نے اپنا اپنا حق رائے دہی اپنے اپنے متعلقہ انتخابی حلقوں میں استعمال کیا بتایاگیا ہے کہ جسٹس اعجاز الاحسن ،پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان وسیم اکرم نے اپنی والدہ کے ہمراہ سمن آباد کے علاقے میں اپنا ووٹ کاسٹ کیا جبکہ پاکستان مسلم لیگ ن کے امیدوار حمزہ شہباز شریف،خواجہ احمد حسان،رانا مشہود،رانا مبشر،سیف الملوک کھوکھر،ملک افضل کھوکھر،فیصل سیف کھوکھر،ملک وحیدعالم،سمیع اللہ خان،بلال یاسین ،ملک ریاض ،مہر اشتیاق ، علی پرویز ملک ،پرویز ملک ،شائستہ پرویز ملک ،شیخ روحیل اصغر ،تحریک انصاف کے امیدوار شفقت محمود،محمود الرشید،اعجاز چوہدری ،مہر واجد عظیم،نعمان قیصر،بیرسٹر حماد اظہر،جمشید اقبال ،اعجاز ڈیال ،علیم خان ،چوہدری محمد منشاء ،ملک ظہیر عباس کھوکھر،ملک کرامت علی کھوکھر ،اسد علی کھوکھرجبکہ پاکستان پیپلزپارٹی کے امیدوار اورنگزیب برکی ،عدنان گورسی ،سید ظفر علی شاہ،افتخار شاہدایڈووکیٹ ،عدیل محی الدین،عاصم محمود بھٹی ،ثمینہ خالد گھرکی،اسلم گل،سہیل اعوان،مجد جٹ اور رانا جمیل احمد جبکہ متحدہ مجلس عمل کے امیدوار حافظ امجد خان،محمد افضل خان،حافظ سلمان بٹ،فرید احمد پراچہ،ارشد بالاکوئی ،چوہدری منظور احمد گجر،ڈاکٹر ریاض الدین یزدانی ،لیاقت بلوچ،وقار ندیم وڑائچ،حافظ حیدر علی میو،پیر اعجاز ہاشمی ،انیلا محمود، امیر العظیم اور چوہدری نظام الدین میوجبکہ پاکستان مسلم لیگ ن کے باغی رہنماء زعیم قادری نے اپنی اہلیہ کے ہمراہ ٹاؤن شپ کے علاقے میں اپنے اپنے انتخابی حلقوں میں ووٹ کاسٹ کیا۔ دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور سابق وزیرعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے چھوٹے صاحبزادے سلمان شہباز اور ان کی اہلیہ نے ماڈل ٹاؤن میں اپنا حق رائے دہی استعمال کیا بتایاگیاہے کہ دونوں میاں بیوی پہلے صبح آٹھ بجے ووٹ کاسٹ کرنے کیلئے اپنے متعلقہ پولنگ سٹیشن پہنچے جہاں انہوں نے پاکستان مسلم لیگ ن کے انتخابی کیمپ سے پولنگ پرچی حاصل کی تاہم جب وہ پولنگ سٹیشن کے اندر پہنچے تو ان کے نام پولنگ ایجنٹوں کے پاس موجود فہرستوں میں موجود نہ تھے جس پر سلمان شہباز اور ان کی اہلیہ بغیر ووٹ کاسٹ کئے واپس چلے گئے جس کے بعد وہ درست پرچی لیکر دوبارہ ووٹ ڈالنے آئے تو انہوں نے اپنا ووٹ شیر پر مہر لگا کر کاسٹ کیا۔ حلقہ این اے 125 سے پاکستان تحریک انصاف کی امیدوار یاسمین راشد نے اپنا ووٹ پی آئی اے کالونی میں کاسٹ کیا ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد یاسمین راشد اپنے حلقہ میں آگئیں اور پولنگ کا عمل ختم ہونے تک انہوں نے این اے 125 میں واقع مختلف پولنگ سٹیشنوں کا دورہ کر کے صورتحال کا جائزہ لیا ۔ پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنماء اور لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 133 سے لیگی امیدوار خواجہ سعد رفیق نے اپنا حق رائے دہی ڈیفنس ہاؤسنگ اتھارٹی میں واقع امریکن لائسٹف سکول میں کاسٹ کیا ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد خواجہ سعد رفیق نے اپنے انتخابی حلقہ کے پولنگ سٹیشنوں کا دورہ کیا اور وہاں پر موجود ن لیگی کارکنوں کو ہدایات جاری کرتے ہوئے ووٹروں کو زیادہ سے زیادہ پولنگ سٹیشن تک پہنچانے کی ہدایات بھی جاری کیں۔ سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے اپنی اہلیہ اور بیٹے کے ہمراہ اپنا ووٹ کاسٹ کیا بتایاگیا ہے کہ سپیکر قومی اسمبلی اپنے اہل خانہ کے ہمراہ ووٹ کاسٹ کرنے کیلئے علامہ اقبال روڈ پر واقع سردار گرلز ہائی سکول پہنچے جہاں وہ ووٹ کاسٹ کرنے کے بعد واپس چلے گئے

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...