نواز شریف کا ذاتی معالج کو میڈیکل ٹیم میں شامل ، طبی سہولیات جیل ہی میں فراہم کرنے کا مطالبہ

نواز شریف کا ذاتی معالج کو میڈیکل ٹیم میں شامل ، طبی سہولیات جیل ہی میں فراہم ...

راولپنڈی(این این آئی)سابق وزیر اعظم نواز شریف نے اڈیالہ جیل میں معائنہ کرنے والی ڈاکٹروں کی ٹیم کے ہمراہ الٹراساؤنڈ کیلئے ہسپتال جانے سے انکار کرتے ہوئے تمام طبی سہولیات جیل ہی میں فراہم کرنے کا مطالبہ کردیا ہے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق پمز ہسپتال کے ڈاکٹروں پر مشتمل تین رکنی ٹیم نے اڈیالہ جیل میں سابق وزیراعظم نواز شریف کا معائنہ کیا۔ میڈیکل ٹیم نے مسلم لیگ (ن) کے قائد کی صحت پر اطمینان کا اظہا ر کرتے ہوئے کچھ الٹراساؤنڈ تجویز کیے جس کیلئے ڈاکٹرز نواز شریف کو اپنے ہمراہ ہسپتال لے جانا چاہتے تھے تاہم سابق وزیراعظم نے جیل سے باہر جانے سے انکار کرتے ہوئے الٹراساؤنڈ جیل ہی میں کرانے کا مطالبہ کردیا۔علاوہ ازیں سابق وزیراعظم نواز شریف نے اپنے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کو بھی میڈیکل ٹیم میں شامل کرنے کا مطالبہ کیا ہے جس کی پمز ہسپتال کی میڈیکل ٹیم نے بھی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر عدنان 20 سال سے نواز شریف کے پرسنل فزیشن ہیں اور ان کی صحت سے متعلق ہسٹری سے بھی آگاہ ہیں اس لیے ان کی شمولیت سے ٹیم کو فائدہ ہوگا۔دوسری جانب نواز شریف کے پرسنل فزیشن ڈاکٹر عدنان نے نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے شکوہ کیا ہے کہ وہ بارہ دن سے اڈیالہ جیل کا چکر لگا رہے ہیں لیکن انہیں نواز شریف سے ملنے نہیں دیا جا رہا ہے جس پر انہیں تشویش ہے تاہم اگر انہیں ٹیم میں شامل کرلیا جاتا ہے تو یہ خوش آئند بات ہوگی۔

نوازشریف

مزید : صفحہ آخر


loading...