مظفر آبا د میں کشمیریوں پر بھارتی مظالم کیخلاف سینکڑوں افراد احتجاجی مظاہرہ

مظفر آبا د میں کشمیریوں پر بھارتی مظالم کیخلاف سینکڑوں افراد احتجاجی مظاہرہ

مظفرآباد(وقائع نگار خصوصی)ہندوستانی حکومت کالے قوانین اورفوجی طاقت کے زریعے کشمیری آزادی پسندحریت قیادت کو ہراساں کرنا بند کرے،کشمیری قیدی تاریخ کا بدترین ظلم سہنے پر مجبور، اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں جموں کشمیر میں بھارتی مظالم کے حقائق جاننے کیلئے کمیشن بھیجیں بھارتی جیلوں، عقوبت خانوں میں قیداور گھروں میں نظر بندکشمیری قیدیوں کی رہائی کیلئے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل سے مداخلت کی اپیل،بھارتی پرچم نظرآتش، پاسبان حریت جموں کشمیر کی اپیل پرآزاد کشمیر کے دارالحکومت مظفرآباد میں سینکڑوں کشمیری خواتین، بچے، بچیئاں اور بزرگ مقبوضہ کشمیر میں گرفتار آزادی پسند قیادت اورکارکنان کی بھارتی افواج کے ہاتھوں گرفتاریوں ان پرظلم وتشدد کیخلاف سڑکوں پر نکل آئے، احتجاج کررہی خواتین اور بچوں نے بینرزاور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پرسید علی گیلانی، سیدہ آسیہ اندرابی، سمیت بھارتی عقوبت خانوں میں قید کشمیری اسیران کی تصویریں نقش تھیں مظاہرین نے ایک بڑا بینر اٹھا رکھا تھا جس پر اقوام متحدہ اورانسانی حقوق کی عالمی تنظیموں سے کشمیری قیدیوں کی رہائی کے لیئے مطالبات درج تھے احتجاج کررہے لوگوں نے بھارت کیخلاف اور آزادی کے حق میں فلک شگاف نعرے لگائے، تفصیلات کے مطابق بھارتی افواج، این آئی اے اور پولیس کی جانب سے مقبوضہ کشمیرمیں آزادی پسندحریت قیادت جناب سید علی شاہ گیلانی،سیدہ آسیہ اندرابی، ایازاکبر، پیرسیف اللہ، راجہ معراج الدین کلوال، صوفی فہمیدہ، شبیراحمدشاہ، محمدقاسم فکتو،شاہد یوسف، عبدالغنی بٹ، ناہیدہ نسرین،نعیم احمد خان، محمدیوسف فلاحی، ناصرعبداللہ، عمریوسف خان، شکیل احمد یتو، نزیراحمد متو، ارشاداحمد میر،ڈاکٹر محمد شفیع شریعتی،غلام قادربٹ،مظفراحمدڈار،طارق احمد ڈار، محمدایوب میر،نزیر احمد شیخ،جاوید احمد فلائاور دیگرکشمیری قیدیوں کو گرفتار کرکے بھارتی عقوبت خانوں میں منتقل کرنے، جیلوں میں قیدکرنے، تھانوں اور گھروں میں نظربند کرکے ظلم تشدد اور بربریت کا نشانہ بنائے جانے پر شدید احتجاج کیا، احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئیپاسبان حریت جموں کشمیر کے چیئرمین عزیر احمد غزالی نے کہا کے بھارتی حکومت جموں کشمیر میں جاری مبنی برحق آزادی کی تحریک سیبری طرح خائف ہے، تمام تر ریاستی جبر، تشدد اور جارحیت سے بھارت آزادی کی جدوجہدکو دبانے میں کلی طور ناکامی کے بعد آزادی پسند قیادت کومرعوب کرنے کی ناکام سازش کررہا ہیان کا کہنا تھا کے سال ہا سال سے مقیدکشمیری اسیران پر بھارتی اہلکار جیلوں میں جسمانی تشدد کرتے ازیتیں دیتے اورزہنی طورمفلوج کرنے کی کوششیں کرتے ہیں انھوں نے سید علی شاہ گیلانی کی گزشتہ چھ برسوں سے مسلسل خانہ نظربندی، سیدہ آسیہ اندرابی کو دیگر خواتین راہنماؤں سمیت گرفتار کرکے تہاڑ جیل منتقلی، حریت ترجمان ایازاکبر، پیرسیف اللہ، معراج الدین کلوال، محمد یوسف فلاحی سمیت دیگر کشمیری قیادت کی گرفتاریوں کو جموں کشمیر میں بھارت کی عملاً شکست قرار دیتے ہوئے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل اینٹینو گٹریز سیان قیدیوں پربھارتی ظلم کا نوٹس لینے اور فوری رہائی کیلیئے کردار ادا کرنے کی اپیل کی انھوں نے انسانی حقوق کی پامالیوں پراقوام متحدہ کی حالیہ رپورٹ کوسچ کی آوازبتاتے ہوئے جموں کشمیرمیں کمیشن بھیج کر حالات جانچنیں کا مطالبہ کیا، احتجاجی ریلی سے انٹرنیشنل فورم فار جسٹس اینڈ ہیومن رائٹس کے وائس چیئرمین مشتاق السلام نے کہا کے بھارت کشمیر میں انسانی حقوق پامال کررہا ہے نوجوانوں کو شہید اور عوام پر ظلم تشدد کا سلسلہ جاری ہے، کالے قوانین کی آڑ میں بھارتی افواج انسانیت کو پامال کررہی ہیں عملاً مقبوضہ ریاست جیل میں تبدیل ہے ان حالات میں عالمی برادری کا فرض بنتا ہے کے وہ بھارت کو لگام دے، احتجاج سے خطاب کرتے ہوئے مہاجر خاتون مہناز قریشی نے کہا کے کشمیری خواتین پرتشدد کو بھارتی افواج جنگی ہتھیار کے طور استعمال کررہی ہے کنن پوش پورہ کا سانحہ، شوپیان کی نیلوفر اور آسیہ بہن کی مظلومانہ شہادت بھارت کی نام نہاد جمہوریت پر سیاہ دھبہ ہے ان کا کہنا تھا کے بھارتی ایجنسی این آئی اے کے ہاتھوں معروف آزادی پسند خواتین راہنماؤں سیدہ آسیہ اندرابی، صوفی فہمیدہ اور ناہیدہ نسرین کی گرفتاری بھارت کی بوکھلاہٹ اور خوف قراردیا، انھوں نے ان قیدیوں کو جموں کشمیرسے باہر دہلی منتقل کرنے کی شدید مزمت کرتے ہوئے کہا کے بھارت اب آگ سے کھیل رہا ہے حزب المجاہدین کے کمانڈرمحمد اعظم غازی نے کشمیری عوام کی عطیم جدوجہد کوسلام پیش کرتے ہوئے اس عزم کو دہرایا کے بھارت سے آزادی تک جدوجہد جاری رہے گی، احتجاج سے پاسبان کے وائیس چیئرمین عثمان علی ہاشم نے خطاب کرتے ہوئے کہا کے کشمیری نوجوان اس بات پختہ ارادہ کرچکے ہیں بھارت اب طاقت سے ہمارے عزم کو نہیں تور سکتا، مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے شہنازقاضی نے کہا کے بھارت کا ظلم ناقابل برداشت ہے دنیا کی بڑی طاقتوں کو ہم کشمیریوں کی آواز سننی چاہئیے کشمیری خواتین پر تشدد حد سے بڑہ چکا ہے ننھی طالبہ وردہ منظور نے کشمیری عوام کی جدوجہد کو شاندار الفاظ مین خراج عقیدت پیش کیا مظاہرے سے اقراء عثمان،مائرہ خان اور میمونہ مجیدنے بھی خطاب کیااحتجاجی مظاہرین نے سنٹرل پریس کلب کے سامنے دھرنا دیا بعد ازاں ریلی کے شرکآء نے گھڑی پن چوک تک ریلی نکالی۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...