جنگ زدہ عرب ملک شام میں تین خود کش دھماکے ،ہلاک افراد کی تعداد 200 تک جا پہنچی ،مزید ہلاکتوں کا اندیشہ

جنگ زدہ عرب ملک شام میں تین خود کش دھماکے ،ہلاک افراد کی تعداد 200 تک جا پہنچی ...
جنگ زدہ عرب ملک شام میں تین خود کش دھماکے ،ہلاک افراد کی تعداد 200 تک جا پہنچی ،مزید ہلاکتوں کا اندیشہ

  


دمشق (ڈیلی پاکستان آن لائن) عرب کے جنگ زدہ  ملک شام کے شہر السویدا  میں ہونے والے  3 خود کش حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر 200  تک پہنچ گئی ہے، ہلاک ہونے والوں میں تقریباً 70 عام شہری شامل ہیں جبکہ باقی کا تعلق حکومتی فورسز اور داعش سے ہے۔

شام کی سرکاری نیوز ایجنسی کے مطابق  السویدا شہر میں ہونے والے ان خود کش حملوں میں درجنوں افراد زخمی بھی ہوئے ہیں جبکہ کئی زخمیوں کی حالت نازک ہے جس کی وجہ سے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ اس کے علاوہ سیکیورٹی اہلکاروں نے 2 خود کش بمباروں کو بم حملے کرنے سے پہلے ہی گولی مار دی تھی، واضح رہے کہ  السویدا  شہر شامی دستوں کے کنٹرول میں ہے جبکہ  السویدا شہر میں نشانہ بنایا جانے والا علاقہ گنجان آباد ہے ۔ شامی اپوزیشن کے مبصر گروپ نے حملہ آوروں کا تعلق دہشت گرد تنظیم داعش سے بتایا ہے۔  شامی ذرائع کے مطابق دھماکا خیز خودکش جیکٹوں کی مدد سے یہ بم حملے صرف جنوبی شام کے شہر سویدا میں کیے گئے۔ شامی مبصر برائے انسانی حقوق کے سربراہ رامی عبدالرحمان نے اے ایف پی کو بتایا کہ بم دھماکوں کے بعد داعش کے جنگجوؤں نے جنوبی شام میں سویدا صوبے میں کئی دیگر مقامات پر مسلح حملے بھی شروع کر دیئے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ داعش تنظیم نے جن 7 دیہات پر حملہ کیا تھا ان میں سے 3 پر وہ قبضہ کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے۔دوسری طرف بتایا گیا ہے کہ حالیہ دھماکے گزشتہ کئی ماہ کے دوران داعش کے دہشت گردوں کی طرف سے کیے جانے والے سب سے خونریز حملے ہیں۔ شامی حکومتی دستوں اور ان کے حامی ملیشیا گروپوں نے گزشتہ برس ملک کے مشرقی حصے میں کئی شہری علاقوں سے داعش کے جنگجوؤں کو نکال دیا تھا تاہم اس کے بعد سے اب تک وقفے وقفے سے کئے جانے والے حملوں میں مجموعی طور پر درجنوں حکومتی فوجی، ان کے حامی ملیشیا کے ارکان اور عام شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔ 

مزید : بین الاقوامی /عرب دنیا


loading...