ملک پر مارشل لا ء، جمہوریت کا بدترین ملاپ چل رہا ہے،احسن اقبال

ملک پر مارشل لا ء، جمہوریت کا بدترین ملاپ چل رہا ہے،احسن اقبال

  

لاہور(جنرل رپورٹر) مسلم لیگ (ن) کے سیکرٹری جنرل احسن اقبال نے کہا ہے کہ عوامی سروے کے مطابق 2018ء کے انتخابات میں مسلم لیگ (ن) کو120 نشستیں حاصل ہونا تھیں لیکن آر ٹی ایس سسٹم بیٹھنے کے بعد نتائج کچھ اور نکلے،یہ بدترین چوری تھی جس کے نتائج قوم دو سال بعد بھی بھگت رہی ہے،حکومت ایف اے ٹی ایف کے نام پر فاشسٹ نظام قائم کرنا چاہتی ہے،کرنسی ڈیلر سے جعلی پرچی پر سیکرٹری داخلہ کی سرپرستی میں لوگوں کو غائب کر دیاجائے گا،عمران خان نفرت کی آگ بجھانے کیلئے نیب کے ذریعے اپوزیشن سے بدلہ لے رہے ہیں،آج ملک میں مارشل لا ء اور جمہوریت کا بدترین کمبی نیشن چل رہا ہے،اگر عوام کے بنیادی حقوق محفوظ نہ ہوں، انصاف نہ ہو، آوازیں کچلی جا رہی ہوں تو سیاست، معیشت اور دفاع سمیت سب پر فرق پڑتا ہے،دفاع اچھی معیشت اور اچھی معیشت مضبوط سیاسی نظام کے بغیر نہیں ہو سکتا، حکومت بتائے دو سالوں میں اس کا اپنا کون سا ایک منصوبہ ہے،انہوں نے سوائے گالیاں دینے کے کیا کیا ہے؟، حکومت سے نجات کے لئے عید الاضحی کے بعد اے پی سی کے ذریعے متفقہ لائحہ عمل بنایا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہارا نہوں نے عطا اللہ تارڑ اور دیگر کے ہمراہ پارٹی کے مرکزی سیکرٹری ماڈل ٹاؤن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ احسن اقبال نے کہا کہ دو سال قبل 25 جولائی کو عوام نے انتخابی عمل میں حصہ لیا لیکن بدقسمتی سے عوام کا مینڈیٹ چرایا گیا،2013 میں عوام نے مسلم لیگ (ن) کو مینڈیٹ دیا۔ دنیا 2018 میں مسلم لیگ (ن) کی اقتدار میں واپسی کی توقع کر رہی تھی تاکہ سی پیک آگے چلے اور پالیسیوں کا تسلسل ہو۔ورلڈ بنک نے پاکستان کی 6 فیصد ترقی کی پیشگوئی کی، دنیا کا پاکستان پر اعتماد پیدا ہو گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ملکی معیشت کو بیمار کہنے والے ذرا وہ رپورٹ پڑھ لیں جس کے مطابق25 جولائی 2018 کو مسلم لیگ (ن) کو عوامی سروے کے مطابق 120 نشستیں حاصل ہونا تھیں لیکن آر ٹی ایس سسٹم بیٹھنے کے بعد نتائج کچھ اور نکلے یہ بدترین چوری تھی جس کے نتائج قوم دو سال سے بھگت رہی ہے۔2 سال پہلے 5.8فیصد کی شرح سے ترقی کرنے والی معیشت آج منفی میں جا کر کریش ہو چکی ہے،افراط زر 4 فیصد سے بڑھ کر 13 فیصد ہو گیا، دنیا میں کبھی بھی کوئی معیشت 6 فیصد کریش نہیں کرتی لیکن پاکستان میں نااہل، نالائق اور ناتجربہ کار حکومت کے ہاتھوں ایسا ہو چکا ہے۔اب ایف اے ٹی ایف کے نام پر کسی کو بھی 180 دنوں کے لئے غائب کیا جا سکے گاکیا،ایسے کالے قوانین نافذ کرنے آپ ملک کو ترقی کی راہ پر ڈال سکتے ہیں۔آج ملک میں مختلف مافیاز کا راج ہے جو عوام کی جیبوں پر ڈاکے ڈال رہے ہیں۔

احسن اقبال

مزید :

صفحہ اول -