ناظم آباد میں نوبیا ہتا جوڑے کو غیرت کے نام پر قتل کردیا گیا

ناظم آباد میں نوبیا ہتا جوڑے کو غیرت کے نام پر قتل کردیا گیا

  

کراچی(کرائم رپورٹر)کراچی کے علاقے ناظم آباد میں گزشتہ رات نوبیاہتا جوڑے کو غیرت کے نام پر قتل کردیا گیا، گھر والوں کی مرضی کے خلاف ایک ادھیڑ عمر شخص سے خفیہ شادی کرنے پر لڑکی کے بھائیوں نے واردات کی، جنہیں گرفتار کر لیا گیا ہے۔ رضویہ سوسائٹی تھانے کی حدود ناظم آباد میں سبحان بیکری کے قریب ایک گھر میں 50 سالہ شخص سلیم کو اس کی جواں سال دوسری بیوی عائشہ کے ساتھ گھر میں تیز دھار آلے کے وار سے قتل کر دیا گیا۔مقتول جوڑے کی 4 ماہ قبل ہی شادی ہوئی تھی جبکہ مقتول سلیم اورنگی ٹاؤن میں تعویذ گنڈے کا کام کرتا تھا اور ناظم آباد میں چند ماہ قبل ہی کرائے کے اس مکان میں منتقل ہوا تھا۔پولیس کے مطابق جائے وقوع سے خون آلود چھرا بھی برآمد ہوا ہے، جبکہ عینی شاہدین کے حوالے سے پولیس نے بتایاکہ قتل کی واردات سے کافی دیر قبل اس مکان سے 2 سے 3 افراد باہر نکلتے دیکھے گئے تھے۔پولیس کے مطابق مذکورہ گھر گراؤنڈ پلس تو ہے جس میں ان کے علاو بھی فیملیاں رہائشی پذیر ہیں، ایک خاتون نے بتایا کہ علاقے میں لائٹ نہیں تھی اور گھرسے شور شرابے کی آوازیں آرہی تھی جب خاتون کے شوہر آئے تو انہوں نے جاکر دیکھا تو میاں اور بیوی کی لاشیں پڑی ہوئی تھیں جس کی اطلاع پولیس کو دی گئی تاہم پولیس واقعے کی مزید تفتیش کررہی ہے۔ایس ایس پی سینٹرل عارف اسلم راؤ کے مطابق مقتولہ عائشہ کا اصل نام حنا ہے، جس کا کچھ عرصہ قبل مقتول سلیم سائیں کے اورنگی ٹاؤن میں واقع آستانے پر اپنی ماں کے ساتھ آنا جانا شروع ہوا تھا،جہاں سلیم سائیں نے حنا سے تعلقات استوار کیے اور اسے محبت کے جال میں پھنسا لیا۔پہلے سے شادی شدہ سلیم سائیں نے 35 سالہ حنا سے اس کے گھر والوں کی مرضی کے خلاف خفیہ شادی کی اور اسے عائشہ بی بی کا نام دے کر کرائے کے مکان میں رکھا ہوا تھا۔پولیس کے مطابق ملزمان نے بتایاکہ ان کی بہن کے اس عمل سے ان کی خاندان میں بدنامی ہوئی، جس پر انہوں نے ان کے اس خفیہ گھر کا سراغ لگایا اور گزشتہ رات اس وقت واردات کی جب علاقے میں بجلی نہیں تھی۔پولیس کے مطابق جس مکان میں واردات ہوئی وہاں رہائش پذیر خاتون نے شور شرابے کی آواز سن کر اپنے شوہر کو آگاہ کیا جنہوں نے ملزمان کو فرار ہوتے دیکھا اور ڈکیتی کی واردات سمجھ کر نیچے جا کر دیکھا تو گھر کے دونوں مکین خون میں لت پت پڑے تھے، اسی پڑوسی نے ہی پولیس کو اس دہرے قتل کی واردات سے آگاہ کیا۔ایس ایس پی عارف اسلم راؤ کے مطابق عینی شاہدین کے بیانات کے بعد رضویہ سوسائٹی پولیس نے 3 گھنٹے میں دہرے قتل کا کیس حل کرلیا اور اس میں ملوث مقتولہ حنا کے 2 بھائیوں آصف اور اشرف کو گرفتار کر لیاہے۔انہوں نے بتایاکہ ملزمان آصف اور اشرف نے خاندان کی مرضی کے خلاف شادی کرنے پر جوڑے کو قتل کا اعترف کرلیا ہے، ملزمان کی عمریں 22 اور 24 سال ہیں، مقدمہ قتل میں انہیں گرفتار کرکے ان سے تفتیش شروع کر دی گئی ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -