جامعہ بلوچستان میں خفیہ کیمروں سے ویڈیوز بنانے کاالزام ثابت،سابق وی سی ڈاکٹر جاوید اقبال کیخلاف جوڈیشل کارروائی کی سفارش، چیف سیکورٹی آفیسر سمیت 2 اہلکار برطرف

جامعہ بلوچستان میں خفیہ کیمروں سے ویڈیوز بنانے کاالزام ثابت،سابق وی سی ...
جامعہ بلوچستان میں خفیہ کیمروں سے ویڈیوز بنانے کاالزام ثابت،سابق وی سی ڈاکٹر جاوید اقبال کیخلاف جوڈیشل کارروائی کی سفارش، چیف سیکورٹی آفیسر سمیت 2 اہلکار برطرف

  

کوئٹہ (ڈیلی پاکستان آن لائن)جامعہ بلوچستان کے سینڈیکٹ اجلاس میں ویڈیو الزام ثابت ہونے پر 2 اہلکار وں کوبرطرف اور2 کی انکریمنٹ روکنے کافیصلہ کیاگیا ہے جبکہ سابق وی سی ڈاکٹر جاوید اقبال کیخلاف گورنر بلوچستان سے جوڈیشل کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔

نجی ٹی وی کے مطابق وائس چانسلر کی زیرصدارت جامعہ بلوچستان کا88 واںسینڈیکٹ کااجلاس ہوا،جسٹس ہاشم کاکڑ،مشیر وزیراعلیٰ سمیت دیگر ممبران نے شرکت کی ،بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ خفیہ کیمروں سے جامعہ بلوچستان میں ویڈیوبنائی گئیں ،ایف آئی اے رپورٹ میں بھی کہاگیاہے کہ جامعہ بلوچستان میں خفیہ کیمروں سے ویڈیوز بنانے کاالزام ثابت ہو گیا ۔

اجلاس میںویڈیو الزام ثابت ہونے پر 2 اہلکار وں کوبرطرف اور2 کی انکریمنٹ روکنے کافیصلہ کیاگیا،چیف سیکورٹی آفیسر محمد نعیم اور سکیورٹی گارڈ سیف اللہ ملازمت سے برخاست ہوگئے۔

اجلاس میں سابق وی سی ڈاکٹر جاوید اقبال کیخلاف گورنر بلوچستان سے جوڈیشل کارروائی کی سفارش کی گئی اورسابق وی سی سے ایوارڈز و ٹائٹلز واپس لینے کی بھی سفارش کی گئی۔

مزید :

علاقائی -بلوچستان -کوئٹہ -