ایف آئی اے کے 346افسران اور اہلکاروں کیخلاف کرپشن سمیت دیگر الزامات کی تحقیقات شروع

ایف آئی اے کے 346افسران اور اہلکاروں کیخلاف کرپشن سمیت دیگر الزامات کی ...

لاہور(زاہد علی خان) ایف آئی اے کے 346افسران اور اہلکاروں کے خلاف کرپشن سمیت دیگر الزمات کے تحت تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں۔ ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ کرپشن، بنک فراڈ، انسانی سمگلروں کو چھوڑنا، سرکاری مال خرد برد کرنا، غلط مقدمات درج کرنا سرفہرست ہیں۔ ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ وفاقی حکومت کافی عرصے سے ایف آئی اے میں کرپشن اور دیگر مقدمات کے حوالے سے سخت اقدامات کر رہی ہے ابتدائی تحقیقات کے دوران جن افسروں اور اہلکاروں کے ملوث ہونے کے ثبوت ملے انہیں کام کرنے سے روکنے کے بعد حراست میں لے لیا جائے گا ۔ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ مکمل صورتحال کے دوران اصل حقائق سامنے آ جائیں گے جس کے بعد حتمی کارروائی ہو گی۔ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ افسران اور اہلکاروں سے مبینہ ساز باز کرنے والے لوگوں کو بھی گرفتار کیا جائے گا۔ ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ گزشتہ تین سال کے دوران ایف آئی اے کی کارکردگی بھی منگوا ئی گئی ہے جن میں سے 101سنگین مقدمات کی از سر نو تفتیش کروائی جائے گی یہ تفتیش زیادہ تر ڈیپوٹیشن پر تعینات افسران کے خلاف بھی ہو گی یہ فہرست وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کو بھجوائی جا رہی ہے اور ایسے افسران کے خلاف ناقص تفتیش کرنے ، مدعی کو فائدہ پہنچانے اور مبینہ طور پر رشوت کے الزام لگائے ہیں۔ذرائع نے یہ بتایا کہ وزیر داخلہ یہ فہرست وزیر اعظم نواز شریف کو بھجوائیں گے ۔

مزید : صفحہ آخر