نیب کا سندھ کے جعلی اخبارات کے خلاف تحقیقات کا آغاز

نیب کا سندھ کے جعلی اخبارات کے خلاف تحقیقات کا آغاز
نیب کا سندھ کے جعلی اخبارات کے خلاف تحقیقات کا آغاز

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ویب ڈیسک) نیب نے کراچی کے 26 ڈمی اخبارات کے خلاف کریک ڈاﺅن کا آغاز کردیا۔ تفصیلات کے مطابق نیب حکام نے ڈمی اخبارات کے ساتھ ساتھ دیگر اخبارات کے پریس کا بھی دورہ کیا اور اشتہارات کی مد میں ہونے والی میگا کرپشن کی باقاعدہ تحقیقات کا آغاز کردیا ہے۔ سب سے بڑی اربوں کی کرپشن پاکستان کی ایک بڑی ایڈورٹائزنگ ایجنسی نے کی ہے جس کے خلاف تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔ اس ایڈورٹائزنگ ایجنسی نے اشتہارات کی مد میں سندھ انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ سے اربوں روپے وصول کئے جبکہ اخبارات کو ادائیگی لاکھوں میں کی گئی۔ کمپنی کے روح رواں پر نیب کے دیگر کیسز میں پنجاب بینک کے کیسز بھی چل رہے ہیں۔ اس وقت نیب میں تین مختلف انکوائیریاں سندھ انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ کے خلاف جاری ہیں جس میں ایک انکوائری سندھ انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ کے آئی ٹی سیل کے خلاف ہے اور باقی دو اشتہارات کی غیر منصفانہ ڈسٹری بیوشن کے خلاف ہیں۔ سندھ انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ کے ایک سینئر بیوروکریٹ کے خلاف بھی نیب میں کرپشن کے کیسز درج ہیں اور اس نے 30 جون تک نیب کے کیسز پر سندھ ہائیکورٹ سے 55 لاکھ کے مچلکوں کے عوض ضمانت کرائی ہوئی ہے۔ ایڈورٹائزنگ ایجنسی نے 36,36 صفحات کے میگزین اور پمفلٹ سندھ حکومت کے ساتھ مل کر شائع کئے جو کہ انفارمیشن منسٹری کے ساتھ مل بیٹھ کر کھالئے۔ نیب مختلف اخبارات کے ABC ریٹ اور سرکولیشن پر بھی تحقیقات کررہی ہے۔ نیب نے سندھ کے مختلف محکموں جیسا کہ ایجوکیشن، زراعت، فوڈ سیکیورٹی اور بلدیات کے محکموں میں ہونے والی کرپشن کے حوالے سے 286 افراد کی لسٹ تیار کرلی ہے جس میں 30کے قریب سیکرٹری، ایڈیشنل سیرکٹری، ڈی جی، سیکشن آفیسرز لیول کے افسران شامل ہیں۔ اس کے علاوہ کرچی میں جاری ہاﺅسنگ سکیموں میں گھپلوں کی انکوائری کی بھی تحقیقات کی جارہی ہیں۔

مزید :

اسلام آباد -